fbpx

سندھ اسمبلی میں اپوزیشن ارکان کی جانب سے تماشہ لگایا گیا،سعید غنی

وزیر تعلیم سندھ سعیدغنی نے کہا ہے کہ آج سندھ اسمبلی میں اپوزیشن ارکان کی جانب سے تماشہ لگایا گیا ۔ان کی جانب سے یہ ثابت کرنے کی کوشش کی جارہی تھی کہ وہ کراچی ہمدرد ہیں لیکن کراچی کے شہریوں کے سامنے ان کا چہرا بے نقاب ہوچکا ہے ۔کراچی کے شہری ان کو ذلت آمیز شکست دے رہے ہیں۔وہ جمعہ کو سندھ اسمبلی کے اجلاس کے بعد میڈیا سے گفتگو کررہے تھے ۔
سعید غنی نے کہا کہ کراچی میں پی ٹی آئی کا ووٹ کم اور پیپلزپارٹی کا بڑھ گیا ہے ۔پی ٹی آئی کا ووٹ 35 ہزار سے کم ہوکر 7 ہزار پرآگیا ہے ۔اب کراچی کے لوگوں کی اصل نمائندگی سامنے آرہی ہے۔کوئی وفاقی وزیر اپنی نشست چھوڑے اور اس کی جماعت پانچویں نمبر پر آئے تو یہ اس کے لیے شرمناک بات ہے ۔
انہوں نے کہا کہ پیپلز پارٹی کا ایک ایک شخص پانی کی قلت پر آواز اٹھا رہا ہے۔
سندھ میں لاکھوں ایکڑ زمینوں پر پانی نہیں ہے۔اگر پانی کی قلت پر بات کرنی ہے تو وفاقی حکومت سے کرو۔جب پانی کی قلت پر قرارداد آتی ہے تو یہ اس قرارداد کی مخالفت کرتے ہیں۔متنازع مردم شماری پر ایم کیو ایم نے دستخط کیے ہیں۔آج تک کوئی فیصلہ سی سی آئی میں ووٹنگ پر نہیں ہوا۔ وزیراعلی سندھ نے مردم شماری کے ایشو پر مشترکہ پارلیمنٹ کااجلاس بلانے کامطالبہ کیا۔
انہوں نے کہا کہ یہ لوگ گیس کی قلت پر بات نہیں کرتے ہیں ۔آج اپوزیشن نے جو کچھ کیا وہ صرف ڈرامہ بازی ہے ۔کراچی کووفاق سے صوبے کوملنے والے حصے سے پانی ملتا ہے۔ یہ لوگ اس پر بات نہیں کریں گے لیکن یہاں آ کر ڈرامے کرتے ہیں۔اگر یہ سندھ کے نمائندے ہیں تو وزارتیں چھوڑ دیں۔ یہ بڑی بری طرح بے نقاب ہوئے ہیں۔ہم صرف پابندی لگاتے ہیں تویہ کبھی صوبے کا تو کبھی گورنر راج کا مطالبہ کرنا شروع کردیتے ہیں ۔

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.