fbpx

جعلی و غیر معیاری ادویات کی فروخت کرنے والوں کے گرد گھیرا تنگ کیا جاے ۔ ایڈیشنل ڈپٹی کمشنر ہیڈ کوارٹرز محمد خالد

فیصل آباد(عثمان صادق)ضلع میں جعلی وغیر معیاری ادویات کی فروخت کے گھناؤنے دھندے کا قلع قمع کرنے میں کوئی کسر اٹھا نہ رکھی جائے اس ضمن میں تمام تر محکمانہ کارروائی شفاف ہونی چاہیے،کسی قسم کی بددیانتی یا بے قاعدگی کو قطعاً برداشت نہیں کیا جائے گا۔یہ بات ایڈیشنل ڈپٹی کمشنر ہیڈ کوارٹرز محمد خالد نے ڈسٹرکٹ کوالٹی کنٹرول بورڈ کے اجلاس کی صدارت کرتے ہوئے جاری کی جس میں ڈرگ انسپکٹرز کی میڈیکل سٹورز/کلینکس کے خلاف کارروائی کی رپورٹس کاجائزہ لیاگیا۔ اجلاس میں سی ای او ہیلتھ ڈاکٹر مشتاق سپرا، سیکرٹری کوالٹی کنٹرول بورڈ روبینہ اختر،ممبرز کمیٹی کیپٹن ڈاکٹر محمد صدیق،غلام صابر اور پنجاب پولیس کے نمائندہ آفیسر بھی موجود تھے۔ایڈیشنل ڈپٹی کمشنر نے کہا کہ علاج کے نام پر انسانی صحت سے کھیلنے والے کسی رعایت کے مستحق نہیں لہذا جعلی ڈاکٹروں ونیم حکیموں کے خلاف آپریشن کو نتیجہ خیز بنایا جائے تاکہ معاشرے سے اس منفی فعل کا خاتمہ ہوسکے۔انہوں نے کہا کہ ڈرگ سیل لائسنس کے بغیر ادویات فروخت کرنے والوں کے سٹورز فوری سیل کرنے کے علاوہ مقدمات درج کرائے جائیں جبکہ زائد المعیاد،جعلی وغیر معیاری ادویات فروخت،ادویات کی حفاظت کیلئے ضروری انتظامات نہ کرنے اورخرید وفروخت کاریکارڈ نہ رکھنے سمیت قواعد وضوابط کی خلاف ورزی کے مرتکب میڈیکل سٹورز/کلینکس کے خلاف سخت کارروائی کی جائے۔اجلاس کے دوران میڈیکل سٹوروں اور ان کوالیفائیڈ افراد کی طرف سے چلائے جانے والے میڈیکل کلینکس کے خلاف محکمانہ کارروائی کے 40کیسز میں قصورواروں کا موقف سنتے ہوئے مستند جواز پیش نہ کرنے پر 32کیسز کو ڈرگ کورٹ ریفر کرنے،3کووارننگ دینے کے علاوہ ایک سٹور سیل،ایک کے خلاف مقدمہ درج اور3کیسز کو موخر کردیاگیا۔

Facebook Notice for EU! You need to login to view and post FB Comments!