fbpx

رسول اکرم صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا

رسول اللہ صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کی حیات طیبہ کوئی لمحہ اور کوئی گھڑی ایسی نہیں جو دعا سے خالی گزری ہو۔تخلیق آدم علیہ السلام کے بعد سب سے پہلی عبادت جواز حضرت آدم علیہ السلام کو سکھائی گئی وہ دعا ہی تھی۔نمبر1:حرام کھانے والے کی دعا قبول نہیں ہوتی۔

حضرت ابوہریرہ رضی اللہ تعالی عنہ سے روایت ہے رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا اللہ کا کوئی چیز قبول نہیں کرتا بے شک اللہ تعالی نے مومنوں کو ایسی چیز کا حکم دیا ہے جس کا حکم رسولوں کو دیا چنانچہ ارشاد فرمایا اے رسول! پاک چیز کھاؤ اور نیک عمل کرو۔ اللہ ارشاد فرماتا ہے اے لوگو جو ایمان لائے ہو کھاؤ اس پاک رزق جو ہم نے تم کو دیا ہے پھر آپ صلی اللہ علیہ وسلم نے ایک شخص کا ذکر کیا جو طویل سفر کے غبار آلود اور گندے بالوں کے ساتھ حج کے لئے آتا ہے۔ دونوں ہاتھ آسمان کی طرف پھیلا کر دعا کرتا ہے۔ اے میرے رب! اے میرے رب! اور حال یہ ہے

کہ اس کا کھانا پینا پہننا سب حرام مال سے ہے حرام مال سے ہی پرورش کیا گیا ہے ایسے شخص کی دعا کیسے قبول کی جائے گی۔