ورلڈ ہیڈر ایڈ

صحت مند معاشرے کے قیام میں بچوں کو مہلک بیماریوں سے محفوظ رکھنے کیلئے حفاظتی ٹیکوکاکورس ناگزیر ہے۔ ڈی سی محمد علی

فیصل آباد(محمد اویس)ڈپٹی کمشنر محمد علی نے کہا ہے کہ صحت مند معاشرے کے قیام کے سلسلے میں بچوں کو مہلک بیماریوں سے محفوظ رکھنے کے لئے حفاظتی ٹیکوں کو کورس ناگزیر ہے۔اس سلسلے میں حکومتی سطح پر موثراقدامات کئے جارہے ہیں تاہم والدین کو بچوں میں بیماریوں کے خلاف قوت مدافعت میں اضافہ کے لئے ویکسینیشن لازمی کرانے کا پیغام عام کیا جائے تاکہ قوم کے مستقبل کی صحت کا تحفظ یقینی ہوسکے۔انہوں نے یہ بات ایک اجلاس کے دوران ضلع میں توسیعی پروگرام برائے حفاظتی ٹیکہ جات پر عملدرآمد کی پیشرفت کا جائزہ لیتے ہوئے کہی۔ایڈیشنل ڈپٹی کمشنر(فنانس)عاصمہ اعجاز چیمہ،سی ای او ہیلتھ ڈاکٹر مشتاق سپرا،ڈسٹرکٹ ہیلتھ آفیسر ڈاکٹر محمد آصف شہزاد،ضلعی کوآرڈینیٹر برائے انسداد وبائی امراض ڈاکٹر بلال احمد کے علاوہ محکمہ صحت سمیت دیگر محکموں کے افسران بھی موجود تھے۔ڈپٹی کمشنر نے کہا کہ والدین میں ان کے بچوں کو حفاظتی ٹیکوں کی افادیت اور اہمیت کے بارے میں شعور اجاگر کرنے کے لئے آگاہی پروگرامز کا دائرہ وسیع کیا جائے تاکہ والدین میں 15ماہ تک کے بچے کی 10مختلف بیماریوں سے بچاؤ کے لئے ویکسینیشن کرانے کا احساس برقرار رہے۔انہوں نے کہا کہ بچوں کو حفاظتی ٹیکوں کا کورس مکمل کرانا ایک قومی فرض ہے۔اس ضمن میں معاشرے تک یہ ذمہ داری ادا کرنے کا پیغام اجاگر کریں تاکہ سو فیصد بچوں کی ویکسینیشن ہوسکے۔ڈپٹی کمشنر نے محکمہ صحت کے افسران سے کہا کہ وہ بچوں کو حفاظتی ٹیکہ جات لگانے کے مقررہ ٹارگٹس کو شیڈول کے تحت مکمل کریں اور کارکردگی رپورٹ سے انہیں بھی آگاہ رکھا جائے۔ڈسٹرکٹ ہیلتھ آفیسر نے بتایا کہ پیدائش سے پندرہ ماہ تک بچوں کو حفاظتی ٹیکے لگوا کر تپ دق،پولیو،خناق،نمونیا،کالی کھانسی،کالا یرقان،گردن توڑ بخار،اسہال،تشنج اور خسرہ جیسی مہلک بیماریوں سے بچایا جاسکتا ہے اور ہر یونین کونسل میں مرکز صحت سے یہ سہولت مفت دستیاب ہے۔انہوں نے بتایا کہ ای پی آئی پروگرام کے تحت سالانہ 2لاکھ 70ہزاربچوں کو حفاظتی ٹیکے لگانے کا ہدف جبکہ ماہانہ 22ہزار500کا ٹارگٹ مقرر ہے جس کے حصول کے لئے تمام وسائل بروئے کار لائے جارہے ہیں۔

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.