چنیوٹ۔سرکاری ہسپتال کے ڈاکٹروں کو مسیحائی بھول گئی وزیراعظم عمران خان کے احکامات کو ٹھوکر ماردی گئی ڈی ایچ کیو چنیوٹ میں ڈاکٹرز کا مریضوں سے غیر انسانی سلوک برقرار ۔ستر سالہ خاتون کو معذور بیٹے کی دوا اور چیک اپ کی بجائے دھکے بوڑھی خاتون معذور بیٹے کو وہیل چیئر کے سہارے خود ہسپتال لائی ڈی ایچ کیو چنیوٹ میں خدمت گار کاوٴنٹر بھی ختم کر دیا گیا بوڑھی خاتون اور اس کے معذور بیٹے کو ڈاکٹروں نےطبی امداد نہ دی ۔نیا پاکستان میں بھی انسانیت سوز واقعات کا سلسلہ جاری مریض مایوس ہونے لگے

چنیوٹ
Oc
نیا پاکستان بھی عوام کے دکھوں کا مداوا نہ کرسکا ڈی ایچ کیو چنیوٹ میں معذور بیٹے کو طبی امداد کے لئے لانے والی بوڑھی ماں کو ڈاکٹروں نے طبی امداد کی بجائے دھدکار دیا
Vo
ڈی ایچ کیو چنیوٹ میں ڈاکٹروں کی جانب سے مریضوں کے ساتھ غیر انسانی سلوک برقرار ہے اور ہسپتال میں مریضوں کو طبی امداد کی بجائے دھدکارنے کا سلسلہ جاری ہے اسپتال میں معذور بیٹے کو طبی امداد کے لئے لانے والی بوڑھی خاتون کو اسپتال ایمرجنسی میں تعینات ڈاکٹروں نے وہیل چیئر ایمرجینسی ڈاکٹرز روم میں لے جانے پر چیک اپ اور طبی امداد فراہم کرنے سے انکار کر دیا جبکہ دوسری جانب ہسپتال انتظامیہ نے معذور افراد کی مدد کے لئے بنایا گیا مدد گار کاوٴنٹر بھی ختم کر دیا ہے جس سے معذور اور ضعیف افراد شدید مشکلات سے دوچار نئے پاکستان کی حکومت سے نالاں مایوسی کی زندگی گزارنے پر مجبور ہیں متاثرین نے وزیراعظم پاکستان عمران خان سے ڈاکٹروں کے منفی رویہ کے خلاف نوٹس لینے کا مطالبہ کیا ہے

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.