fbpx

13 سالہ بچے کے ساتھ بدفعلی کرنے والے دو ملزمان گرفتار

13 سالہ بچے کے ساتھ بدفعلی کرنے والے دو ملزمان گرفتار

باغی ٹی وی کی رپورٹ کے مطابق پنجاب کے صوبائی دارالحکومت لاہور میں 13 سالہ بچے کے ساتھ بدفعلی کرنے والے دو ملزمان گرفتارکر لئے گئے

ایس پی کینٹ عیسی سکھیرا کی ہدایت پر تھانہ ڈیفنس اے پولیس نے بروقت کاروائی کی،13 سالہ بچے ریاض کے ساتھ بدفعلی کرنے والے دو ملزمان کو گرفتار کر لیا گیا گرفتار ملزمان میں ابو بکر اور عمیر شامل ہیں، جبکہ تیسرے ملزم فیضان کی گرفتاری کے لیے چھاپے مارے جا رہے ہیں،ملزمان متاثرہ بچے کے محلے دار ہیں، ملزمان نے ورغلا کر بچے کو بدفعلی کا نشانہ بنایا،متاثرہ بچے کی والدہ کی مدعیت میں ملزمان کے خلاف مقدمہ درج کر لیا گیا،ایس پی کینٹ عیسی سکھیرا کا کہنا ہے کہ بچوں کا جنسی استحصال کرنے والوں کو کیفر کردار تک پہنچایا جائے گا،

قبل ازیں جڑانوالہ میں سات سالہ طالب علم بصیرپور میں 16 سالہ لڑکی کو زیادتی کا نشانہ بنا دیا گیا۔ گوجرہ میں 12سالہ بچی سے 4ا فراد نے اجتماعی زیادتی کی جبکہ چیچہ وطنی میں باپ نے بیٹی کو ہوس کا نشانہ بنا ڈالا۔ شیخوپورہ میں لڑکی کو 4 روز تک آبروریزی کا نشانہ بنایا جاتا رہا ۔

ٹوبہ ٹیک سنگھ کے چک نمبر 328 ج ب کی رہائشی خاتون اپنی 12سالہ بیٹی کے ہمراہ بس میں سوار ہوئی، نامعلوم خاتون باتوں میں لگا کر اپنے ہمراہ موچیوالہ روڈ لے گئی جہاں اسکے خاوند نے اس کی بیٹی کو چار افراد کے حوالے کر دیا جنہوں نے اسے زیادتی کا نشانہ بنایا۔ تھانہ سٹی پولیس نے مقدمہ درج کرکے ملزمان کی تلاش شروع کر دی ہے۔ دوسری جانب چیچہ وطنی ے نواحی گاؤں 110/12-L کی رہائشی نے رپورٹ درج کرائی کہ میرے خاوند منظور احمد نے میری بیٹی کے ساتھ زبردستی زیادتی کی جس پر پولیس نے ملزم منظور احمد کے خلاف مقدمہ درج کر لیا۔ جڑانوالہ کے تھانہ روڈالہ کے نواحی گاؤں 29 گ ب کی رہائشی نے مقدمہ درج کر رہا ہے، اسکا 7 سالہ بیٹا گورنمنٹ پرائمری سکول میں اول جماعت کا طالب علم ہے۔ ابرار حسین نے اسے زبردستی اغواء کیا اور قریبی فصل میں زیادتی کا نشانہ بنا ڈالا۔ بصیرپورکے چورستہ میاں خان کے گاؤں دھرمیوالا میں سولہ سالہ لڑکی گلی سے گزر رہی تھی، حبیب اللہ نے طاہر کی مدد سے اسے مکئی کی فصل میں زیادتی کا نشانہ بنا ڈالا، مقامی پولیس نے مقدمہ درج کرلیا ہے۔

شیخوپورہ کے تھانہ صفدرآباد کے علاقہ محلہ سادات کالونی کی زیادتی کاشکار لڑکی میڈیکل تصدیق کے باوجود مقدمہ درج نہ ہونے پر علاقہ مجسٹریٹ کی عدالت پہنچ گئی اور بتایا ملزم سجاول نے اپنے دوست سانوال کے ہمراہ اغوا کرکے نامعلوم مقام پر چار روز تک زیادتی کرتا رہا۔ بااثر زمیندار کے بیٹے کو رشوت کے بعد چھوڑ دیا گیا

واضح رہے کہ آئی جی پنجاب انعام غنی نے خواتین کو ہراساں کرنے والے ملزمان کے خلاف سخت کارروائی کے احکامات جاری کر رکھے ہیں جبکہ پنجاب پولیس کی جانب سے خواتین کے لئے ایک سیفٹی ایپ بھی متعارف کرائی گئی ہے ،اس ضمن میں فیاض الحسن چوہان نے کہا تھا کہ خواتین ایمرجنسی صورتحال میں ایپ میں خصوصی بٹن دبا کر پولیس کی مدد حاصل کر سکیں گی اور اس کے علاوہ فون کال اور میسج کے ذریعے بھی خواتین دیگر معاملوں میں رہنمائی حاصل کر سکتی ہیں ترجمان پنجاب حکومت نے کہا تھا کہ خواتین کا تحفظ اور بہتر رہنمائی وزیر اعلیٰ پنجاب سردار عثمان بزدار کی اولین ترجیحات ہیں خواتین سے گزارش ہے اس ایپ کے استعمال سے اپنا اور اپنے پیاروں کا تحفظ یقینی بنائیں۔

خاتون سے زیادتی اور زبردستی شادی کی کوشش کرنے والا ملزم گرفتار

واش روم استعمال کیا،آرڈر کیوں نہیں دیا؟گلوریا جینز مری کے ملازمین کا حاملہ خاتون پر تشدد،ملزمان گرفتار

کرونا میں مرد کو ہمبستری سے روکنا گناہ یا ثواب

غیرت کے نام پر سنگدل باپ نے 15 سالہ بیٹی کو قتل کر دیا

بیوی طلاق لینے عدالت پہنچ گئی، کہا شادی کو تین سال ہو گئے، شوہر نہیں کرتا یہ "کام”

50 ہزار میں بچہ فروخت کرنے والی ماں گرفتار

ایم بی اے کی طالبہ کو ہراساں کرنا ساتھی طالب علم کو مہنگا پڑ گیا

یہ ہے لاہور، ایک ہفتے میں 51 فحاشی کے اڈوں پر چھاپہ،273 ملزمان گرفتار

طالبعلم کے ساتھ گھناؤنا کام کرنیوالا قاری گرفتار،قبرستان میں گورکن کی بچے سے زیادتی

راہ چلتی طالبات کو ہراساں اور آوازیں کسنے والا اوباش گرفتار

طالبات کو کالج کے باہر چھیڑنے والا گرفتار،گھر کی چھت پر لڑکی کے سامنے برہنہ ہونیوالا بھی نہ بچ سکا

پولیس کا قحبہ خانے پر چھاپہ،14 مرد، سات خواتین گرفتار

خاتون کے ساتھ زیادتی ،عدالت کا چھ ماہ تک گاؤں کی خواتین کے کپڑے مفت دھونے کا حکم

موٹرسائیکل پر گھر چھوڑنے کے بہانے ملزم کی خاتون سے زیادتی

88 قبحہ خانوں پر چھاپوں کے دوران 417 ملزمان گرفتار

لاہور میں خاتون کو رکشہ پر ہراساں کرنے کا ایک اور واقعہ

Facebook Notice for EU! You need to login to view and post FB Comments!