fbpx

15 سال سے کم عمر بچوں کے لیے ویکسین کی منظوری سے متعلق بڑا قدم

15 سال سے کم عمر بچوں کے لیے ویکسین کی منظوری سے متعلق بڑا قدم

فائزر اور بائیو این ٹیک نے بچوں کے لیے بھی کرونا ویکسین کی منظوری مانگ لی ہے۔ امریکی کمپنی فائزر اور جرمن کمپنی بائیو این ٹیک نے یورپی یونین کے ڈرگ ریگولیٹرز سے درخواست کی ہے کہ وہ 12 سے 15 سال کی عمر کے بچوں کے لیے کرونا وائرس کے ٹیکے کو منظوری فراہم کریں۔ اس اقدام سے یورپ میں نوجوانوں اور کم خطرے والی آبادیوں کو بھی ویکسین تک رسائی مل سکتی ہے۔
فائزر اور بائیو این ٹیک کا کہنا ہے کہ ان کی درخواست 2 ہزار سے زیادہ نو عمروں پر کی جانے والی ایک جدید تحقیق پر مبنی ہے، جس میں یہ ویکسین محفوظ اور مؤثر پائی گئی۔
خیال رہے کہ اس سے قبل مشترکہ طور پر کرونا ویکسین تیار کرنے والی ان کمپنیوں نے درخواست کی تھی کہ امریکی فوڈ اینڈ ڈرگ ایڈمنسٹریشن (ایف ڈی اے) ان کی ویکسین کے ہنگامی استعمال کی اجازت کو 12 تا 15 سال کی عمر تک بڑھایا جائے۔
ادھر جرمنی کی وزارت صحت کی جانب سے اس خبر کا خیر مقدم کیا گیا ہے، وزیر صحت کا کہنا تھا کہ بڑے بچوں کے لیے ویکسین کی منظوری دی جا سکتی ہے۔
یاد رہے کہ فائزر اور بائیو این ٹیک کی تیار کردہ کو وِڈ 19 ویکسین پہلی ویکسین تھی، گزشتہ سال دسمبر میں ای ایم اے نے جس کی منظوری دی تھی، بعد ازاں 16 سال اور اس سے زائد عمر کے افراد کے لیے 27 ممالک کے یورپی یونین میں استعمال کے لیے اسے لائسنس فراہم کیا گیا تھا۔

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.