fbpx

باباگرونانک کی برسی کی 3روزہ تقریبات آج سےشروع:دنیابھرسےسکھ عقیدت مند کی آمدشروع

ننکانہ:کرتارپور میں بابا گرو نانک کی 483 ویں برسی کی 3 روزہ تقریبات آج سے شروع ہو گئیں۔کرتارپور میں تقریبات میں شرکت کے لیے اندرون ملک سمیت دنیا بھر سے سکھ یاتری پہنچ رہے ہیں۔

بابا گرونانک کی برسی پر سخت حفاظتی انتظامات کئے گئے ہیں۔ اختتامی تقریب دیوان استھان میں ہوگی جس میں پاکستانی انتظامیہ کے اہلکاربھی شرکت کریں گے۔

بابا جی حضرت گرو نانک 1522 میں کرتار پور گئے تھے جہاں انہوں نے اپنی زندگی کے 18 سال گزارے اوران کا انتقال بھی وہیں ہوا اور گرودوارہ بھی وہیں تعمیر کیا گیا۔اس وجہ سے سکھوں کے نزدیک کرتار پور کی بہت اہمیت ہے۔

پاکستان کے ضلع ناروال میں کرتار پور ہی وہ مقام ہے جہاں سکھوں کے پہلے گرو نے اپنی زندگی کے آخری ایام بسر کیے تھے۔ اسی مقام پر ان کی ایک سمادھی اور قبر بھی ہے جو سکھوں کے لیے مقدس ہے۔

سکھ مت کے بانی اور پہلے گرو بابا نانک اس دنیا سے 1539 میں رخصت ہوئے تھے۔ بابا گرو نانک کی پیدائش جس علاقے میں ہوئی وہ اب ننکانہ صاحب کہلاتا ہے۔

تاریخ بتاتی ہے کہ گرو نانک صاحب ہندو گھرانے میں پیدا ہوئے تھے۔ ان کے والد کا نام کلیان چند داس اور والدہ ماتا ترپتا تھیں جب کہ وہ ان کی اکلوتی نرینہ اولاد تھے۔گرو نانک صاحب نے سنسکرت کے ساتھ باقاعدہ فارسی زبان بھی سیکھی ۔

بابا گرو نانک صاحب نے خود کو ایک معلّم کے طور پر منوایا اور ان کی تعلیمات و روایات کو بہت پزیرائی اور فروغ ملا اور آج سکھ اسی کے مطابق اس مقام پر اکٹھے ہوتے ہیں اور عبادت کرتے ہیں۔محبت اور خلق خدا سے لگاؤ کی بنیادی تعلیم کی وجہ سے بڑی تعداد بابا گرو نانک کی پیروکار اور عقیدت مند ہے۔

صحافیوں کے خلاف مقدمات، شیریں مزاری میدان میں آ گئیں، بڑا اعلان کر دیا

سرکاری زمین پر ذاتی سڑکیں، کلب اور سوئمنگ پول بن رہا ہے،ملک کو امراء لوٹ کر کھا گئے،عدالت برہم

جتنی ناانصافی اسلام آباد میں ہے اتنی شاید ہی کسی اور جگہ ہو،عدالت

اسلام آباد میں ریاست کا کہیں وجود ہی نہیں،ایلیٹ پر قانون نافذ نہیں ہوتا ،عدالت کے ریمارکس