fbpx

تیس سال کویت کی سفارتی خدمات انجام دینے والے سفیر کیلئے برطانیہ کا بڑا اعزاز

خالدویسان 1992 سے لندن میں تعینات تھے، ملکہ الزبتھ نے اعلی ترین اعزاز سے نوازا

برطانوی ملکہ الزبتھ نے کویت کے سفیر خالد الدویسان کو تین دہائیوں پر محیط خدمات کے بدلے میں برطانیہ کے غیر معمولی اور بہت کم لوگوں کو مل پانے والے اعزاز سے نوازا ہے۔

باغی ٹی وی : ” العربیہ” کے مطابق کویت کی خبر رساں ایجنسی کونا کی خبر کے مطابق، برطانیہ کی ملکہ الزبتھ دوم نے کویت کے سفیر خالد الدویسان کو تین دہائیوں کی خدمات کے بعد ایک ‘نایاب اور غیر معمولی اعزاز’ سے نوازا ہے کویتی سفیر کو آرڈر آف سینٹ مائیکل اینڈ سینٹ جارج کے لیے مقرر کیا گیا تھا، یہ اعزاز اعلیٰ عہدے پر رہنے والوں کو دیا جاتا ہے، یا جو اعلی افسران کےلیے مخصوص ہے جنہوں نے غیر فوجی میدان میں انتہائی غیر معمولی اور اہم ترین خدمات بیرون ملک یعنی سفارتی شعبے میں انجام دی ہوں۔

یورپ میں گرمی کی شدید لہر،برطانیہ میں ریلوے پھاٹک پر نصب ٹرین کے سگنلز پگھل گئے

ڈہلومیٹک کور کا مارشل السٹئیر ہیرسن نے کویتی سفیر کے لے اس اعزاز کوسراہتے ہوئے کہا ہے کہ خالد الدویسان کو ملنے والا یہ اعزاز کم ہی لوگوں کو ملتا ہے جو انہیں ان کی سفارت سے سبکدوشی پر ملکہ الزبتھ کی طرف سے عطا کیا گیا ہے۔

انہوں نے مزید کہا یہ ان کی خدمات کی تحسین اور اعتراف کا اعلان ہے۔ جو خدمات انہوں نے گذشتہ تیس برسوں کے دوران برطانیہ اور کویت کے دو طرفہ تعلقات کے لیے انجام دی ہیں۔ ہیریسن نے تعریف کی کہ تیس برس تک برطانیہ میں سفیر رہے۔

واضح رہے خالد الدویسانی 1992 سے برطانیہ میں سفارت کاری کے شعبے میں بروئے کار رہے۔ جبکہ 2002 وہ براہ راست سفارتی شعبے میں رہے۔

توانائی بحران سے نمٹنے کیلئےبنگلہ دیشی حکومت کا سخت اقدامات کا فیصلہ