fbpx

ٹھٹھہ: کمبھار برادری کے300 خاندان برسات کے بعد شدید پریشانی کا شکار، منتخب نمائندے اور ضلعی انتظامیہ نے کوئی مددنہ کی- متاثرین فریادی

باغی ٹی وی ،ٹھٹھہ(نامہ نگار راجہ قریشی )کمبھار برادری کے300 خاندان برسات کے بعد شدید پریشانی کا شکار، منتخب نمائندے اور ضلعی انتظامیہ نے کوئی مددنہ کی- متاثرین فریادی
تفصیل کے مطابق حالیہ مون سون کی برسات نے جہاں ہزاروں گھر تباہ کردئے تھے اورلاکھوں لوگ بےگھر ہوئے،وہیں ٹھٹھہ شہر کے مٹی کے برتن بنانے والے کمبھار خاندان کے تین سو خاندان نہ صرف بے روزگار ہوگئے تھے بلکہ ان کے گھر بھی برسات سے ٹوٹ گئے تھے کمبھار برادری جو صدیوں سے مٹی کے برتن بنا کر کراچی سممیت سندھ بھر میں مٹی کے بنے ہوئے مٹکے، صراحئیاں، پلیٹیں ، پتیلیاں اور دیگر سامان فروخت کرکے اپنا گزر بسر کرتے تھے


برسات اور سیلاب کے سبب یہ جو مٹی دریا اور سمندر سے برتن بنانے کے کئے لاتے تھے وہ مٹی پانی میں بہہ گئی اور جو بنا ہوا سامان ان کے کارخانے میں تھا وہ برسات کے سبب ٹوٹ گیا جس سے یہ خاندان چار ماہ سے سخت بے روزگار ہیں کمبھار برادری کے لوگوں کا کہنا ہے کہ منتخب نمائیندے ووٹ تو لینے آجاتے ہیں مگر ہماری کوئی مدد نہیں کی اور نہ ہی ضلعی انتظامیہ نے کوئی مدد کی ہے انہوں نے کہا ہے کہ ہم سخت پریشانی کا شکار ہیں ہمیںنہ تو راشن دیا گیانہ ہمارے گھر کا سروے کیا گیا ہے انہوں نے وزیراعظم پاکستان اور وزیر اعلیٰ سندھ سے گزارش کی ہے کہ ہماری بھی مدد کی جائے-ہم بھی پاکستانی اور سیلاب سے متاثرہ ہیں-