6 پولیس اہلکاران اپنی ہی حوالات میں

چوہدری طارق اقبال

قصور
ایس ایچ او سٹی پتوکی انسپکٹر ملک طارق ، تفشیشی افسران اور اہلکاروں سمیت چھ افراد کو معطل کرکے فوری حوالات میں بند کر دیا گیا۔ ان ملزمان پولیس اہلکاروں کے خلاف مختلف سنگین دفعات کے تحت مقدمہ نمبر 230 درج کر لیا گیا ، ان پولیس اہلکاروں نے کروڑوں روپے مالیت کی دس کلو سے زائد ہیروئن منشیات فروشوں سے پکڑی اور انہیں گرفتار کر لیا بعد میں ایس ایچ او کی ملی بھگت سے ملزمان سے ساز باز کرکے لیبارٹری میں اصل ہیروئن کی بجائے فیک پاوڈر بھیج دیا تاکہ منشیات فروشوں کو تحفظ مل سکے خفیہ اطلاع ملنے پر ڈی پی او قصور نے فوری طور پر سنئیر افسران پر مشتمل انکوئری کمیٹی بنائی جس میں مذکورہ پولیس ایس ایچ او ملک طارق ، تفشیشی افسران اور باقی اہلکاران بھی ملوث پائے گئے ۔ جن کے خلاف فوری ایکشن لیتے ہوئے کاروائی کرکے انکے خلاف مقدمہ درج کرکے حوالات میں بند کر دیا گیا ڈی پی او زاہد نواز مروت کے مطابق ایسے واقعات ایماندار پولیس افسران اور اہلکاروں کے لیے بدنامی کا باعث بنتے ہیں ، ملک طارق اور ان جیسے کرپٹ پولیس افسران کو ہرگز برداشت نہیں کیا جائے گا

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.