fbpx

ستر سالہ نظام کو جادو کی چھڑی سے ایک دم ٹھیک نہیں کرسکتے. چیف جسٹس اطہر من اللہ

چیف جسٹس اطہر من اللہ نے کہا ہے کہ ستر سالہ نظام کو جادو کی چھڑی سے ایک دم ٹھیک نہیں کرسکتے.

چیف جسٹس اسلام آباد ہائی کورٹ جسٹس اطہر من اللہ کا کہنا ہے کہ ججز اور عدالتوں کو تنقید کا خوف یا گھبراہٹ نہیں ہے۔ اسلام آباد میں تقریب سے خطاب کے دوران جسٹس اطہرمن اللہ نے کہا کہ آئین کے آرٹیکل 7 سے پتہ چلا کہ ریاست کی تشریح میں عدلیہ کا ذکر ہی نہیں ہے.

جسٹس اطہر من اللہ کا کہنا تھا کہ عمارتیں کتنی ہی خوبصورت کیوں نہ ہوں سائلین کو سہولت نہ دے سکیں تو بے معنی ہیں، 70 سالہ نظام میں اصلاحات ضروری ہے، اس نظام کو جادو کی چھڑی سے تبدیل نہیں کرسکتے۔ جسٹس اطہر من اللہ نے کہا کہ مجھے اعتراف کرنے میں کوئی عار نہیں کہ ہمارے سائلین کو ہم پر اعتماد نہیں ہے کیونکہ انہیں بروقت انصاف نہیں ملتا ہے لہذا ہم کوشش میں ہیں کہ انہیں بروقت انساف ملنا چاہئے.

ان کا مزید کہنا تھا کہ یہ بھی ذہن میں رکھیں کہ اس ںظام کو ٹھیک کرنا صرف عدالتوں یا کسی ایک کا کام نہیں ہے بلکہ اس میں سب اداروں کو مل جل کر کام کرنا ہوگا تاکہ ستر سالہ نظام کی خرابی کو ٹھیک کیا جائے.

مزید یہ بھی پڑھیں؛ شادی کے 4 ماہ بعد بیوی شوہر کے لاکھوں روپے اور زیورات چُرا کر فرار
تجدیدی فیس، ٹیلی کام کمپنیوں سے 9.5 ارب روپے وصول. پی ٹی اے
وزیرِ اعظم شہباز شریف کی چینی صدر شی جن پنگ سے ملاقات، سٹریٹجک پارٹنرشپ مزید مضبوط کرنے پر اتفاق
کراچی میں پولیس مقابلے میں ایس ایچ او زخمی، ڈاکو کی ہوئی موت
وزیراعظم کل چین جائیں گے،متعدد یاداشتوں اور معاہدات پر دستخط ہونے کا امکان
زمین کی سطح کے نیچے گرم چٹانوں سے زیادہ موثر توانائی پیدا کی جا سکتی ہے،تحقیق
فارن فنڈڈ فتنے نےانقلاب نہیں خونی مارچ کااعتراف کرلیا ،مریم اورنگزیب
اورنگی ٹاؤن؛ گھر میں سوئی گیس لیکیج سے دھماکا،5بچے والدین سمیت جھلس گئے