ورلڈ ہیڈر ایڈ

تمام مسلمانوں کو قتل کردوں گا ، چلی کے انتہاپسند کا اعلان ، پھر حملے بھی شروع ، پھر سزا بھی ہوگئی

ٹیسکو : برطانیہ میں چلی کے ایک انتہاپسند شہری کو 18 سال کی قید کی سزا، سزا کیوں ہوئی اس کے بارے میں برطانوی میڈیا نے بتایا ہےکہ چلی کے ایک انتہا پسند وینسٹ فلر نے اعلان کردیا کہ میں‌دنیا کے تمام مسلمانوں کو قتل کردوں گا اور پھر اعلان کے بعد حملے بھی شروع کردیئے ، عالمی ذائع ابلاغ کے مطابق چلی کے ایک انہتاپسند وینسٹ فلر نے پہلے اعلان کیا اور بعدازاں ایک ننھے مسلمان بچے پر چاقوسے حملہ کرکے اس کی گردن کو شدید زخمی کردیا .

برطانوی میڈیا کے مطابق وینسٹ فلر نے ٹیسکو کار پارک میں ایک مسلمان بچے دمیرتارکو گردن پر چاقوسے وار کیا اور اسے لہولان کرکے موت وحیات کی کشمکش میں چھوڑ دیا ، برطانوی میڈیا کا کہنا ہے کہ یہ شخص نیوزی لینڈ میں کرائسٹ چرچ کے حملہ آوروں سے متاثر تھا ، یہ واقعہ برطانیہ ویسٹ شائر کے علاقہ میں پیش آیا ،

وینسٹ فلر نے اپنی فیس بک پر یہ تسلیم بھی کیا ہےکہ وہ نیوزی لینڈ میں‌مساجد پر حملہ کرنے والے قاتلوں سے بہت متاثر ہے،دوسری طرف جج پیٹر لاڈر نے ریمارکس دیتے ہوئے کہا ہے کہ مذکورہ شخص ایک دہشت گردانہ سوچ کا حامل تھا اور اس کے دل میں مسلمانوں کے خلاف شدید نفرت اور دشمنی پائی جاتی ہے، کنگسٹن کی عدالت نے اس مجرم شخص نے جرم تسلیم کرلیا ہے اور اس کے پاس سے حملے میں‌استعمال ہونےوالا اسلحہ بھی وصول کرلیا ہے، جس کے بعد عدالت اس نتیجے پر پہنچی ہے کہ اس شخص کو 18 سال کی قید کی سزاسنائی جاتی ہے اور یہ سزا مزید 5 سال بڑھ بھی سکتی ہے

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.