fbpx

حقیقی بھائی نے اپنے ہی دو حقیقی بھائیوں کو دردناک موت کی آغوش میں سلا دیا

اٹک :تھانہ باہتر ضلع اٹک تحصیل فتح جنگ دولت کی ہوس حقیقی بھائی نے اپنے ہی دو حقیقی بھائیوں کو دردناک موت کی آغوش میں سلا دیا مصدقہ اطلاعات کے مطابق والدہ نے اپنے بڑے بیٹے کو دس لاکھ روپے نقد کیش وراثت میں کچھ دیگر چیزیں اور زمین کی حصہ داری و کا معاملہ اپنے بڑے بیٹے عبادت کی ذمہ داری لگائی کہ میرے مرنے کے بعد تم اپنے بہن بھائیوں کو ان کو قانونی جو بھی حصہ داری بنتی ہے

یہ بھی کہا جارہا ہےکہ ان کا کہنا تھاکہ تم نے ان کو دینی ہے مگر بھائی کے روپ میں اور دولت کی ہوس کی وجہ سے اس کے اندر مکمل طور پر درندگی آ چکی تھی جس کے باعث اس نے اپنے ہی رشتوں پر اور اپنے ہی گھر پر قیامت ڈھانے کا منصوبہ بنا لیا اور ظالم درندے نے اپنی بیوی کے ساتھ مل کر اپنے دونوں حقیقی بھائیوں کو بے دردی سے قتل کرنے کے بعد اپنے ہی گھر کے ساتھ بھینسوں کے باڑے میں دفن کر دیا اس شخص کے اندر انسانیت پوری طرح مر چکی تھی

بھانجے بھتیجے یا دوسرے کوئی بھی فیملی ممبر اس سے دونوں بھائیوں کے بارے میں معلومات لیتے یا پوچھتے تو یہ مختلف حیلے بہانوں سے ٹال مٹول سے کام لیتا اس کا پول کھلنے کے بعد بھی اس ظالم کی درندگی ختم نہ ہوئی اپنی بہنوں اور دیگر فیملی ممبران کو کہنے لگا کہ ایف آئی آر درج نہ کرواو مجھے سب کے سامنے قتل کر دو میں ظالم انسان ہوں اس نے خود کو بچانے کا ناکام ناٹک بھی کیا پولیس نے فوری طور پر ایف آئی آر کا اندراج کر کے پیس دن قبل بے دردی سے قتل ہونے والے مقتولین کی نعشیں جائے وقوعہ سے زمین کھود کر نکالنے کے بعد پوسٹ مارٹم کے لیے اسپتال اٹک پہنچا دی ایسے ملزمان کو معاشرے کے لئے نشان عبرت بنانا چاہیے جو چند روپے اور زمین کے تو کرنے کی خاطر شیطانیت اور انسانیت کو بھول کر درندگی کی انتہا کو پہنچ جاتے ہیں