ورلڈ ہیڈر ایڈ

خورشید شاہ کو اچانک کیا ہوا کہ نیب ٹیم انہیں‌ لیکر ہسپتال پہنچ گئی؟ اہم خبر

نیب کی ٹیم پیپلز پارٹی کے رہنما سید خورشید شاہ کو لے کر پولی کلینک ہسپتال پہنچ گئی، خورشید شاہ کو سانس کی تکلیف پر اسپتال منتقل کیا گیا،

باغی ٹی وی کی رپورٹ کے مطابق سید خورشید شاہ کا معمول کا طبی معائنہ کیا جائے گا، نیب ذرائع کی جانب سے بتایا گیا ہے کہ خورشید شاہ کا بلڈ پریشر معمول سے زیادہ ہے، واضح‌ رہے کہ پیپلز پارٹی رہنما خورشید شاہ کو کل نیب کی جانب سے گرفتار کیا گیا ہے، انہیں‌ کل اسلام آباد سے سکھرمنتقل کیا جائے گا، نیب کی جانب سے بتایا گیا ہے کہ سکھرکی احتساب عدالت سے سید خورشید شاہ کا جسمانی ریمانڈ لیا جائے گا، خورشیدشاہ کوہفتہ کوسکھرکی احتساب عدالت میں پیش کیاجائےگا، واضح‌ رہے کہ نیب کی ٹیم نے آج وفاقی دارالحکومت اسلام آباد میں پیپلز پارٹی رہنما خورشید شاہ کی رہائش گاہ پر چھاپہ مارا اور تلاشی کے دوران اہم دستاویزات قبضہ میں لے لی گئی ہیں، نیب ٹیم تین گھنٹے تک ان کی رہائش گاہ پر موجود رہی اور پھر مکمل تلاشی لینے کے بعد واپس روانہ ہو گئی،

نیب کی طرف سے بتایا گیا ہے کہ خورشید شاہ نے مبینہ طور پر بے نامی جائیدادیں اور اثاثے بنائے، اسی طرح ہوٹل، پٹرول پمپ بنائے جبکہ وہ عالی شان گھروں کے مالک ہیں، میڈیا رپورٹس میں بتایا گیا ہے کہ نیب کے مطابق خورشید شاہ نے شکار پور روڈ سکھر میں 25 کروڑ لاگت کا تاج محل ہوٹل اعجاز بلوچ کے نام پر جبکہ روہی روڈ پر کروڑوں کی مالیت کا پیٹرول پمپ فرنٹ مین قاسم شاہ کے نام پر بنایا، ایک اور فرنٹ مین پپو مہر کے نام پر سرکاری اراضی پر بنگلہ اور روہڑی میں بے نامی گلگ ہوٹل تعمیر کیا گیا، پروفیسرز کوآپریٹو ہاؤسنگ سوساٹی سکھر میں بھی محل نما گھر بنایا اور اس کے لیے ظاہر شدہ اثاثوں میں سے رقم استعمال نہیں ہوئی، یہ بھی کہا گیا ہے کہ پیپلزپارٹی رہنما نے عمر جان اینڈ کو اور نواب اینڈ کمپنی کو ٹھیکے دے کر بھی مالی فوائد حاصل کیے،

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.