fbpx

عالمی منڈی میں خام تیل کی قیمتیں 3 ماہ کی کم ترین سطح پر آگئیں

عالمی منڈی میں خام تیل کی قیمتوں میں کمی کا سلسلہ جاری ہے اور تیل کی قیمتیں 12 ہفتوں کی کم ترین سطح پر آگئیں ہیں.برطانوی خبر رساں ایجنسی رائٹرز کے مطابق و عالمی مارکیٹ میں برطانوی کروڈ آئل کی قیمت مزید 2.99 ڈالر یعنی 2.29 فیصد کمی کے بعد 99.78 ڈالر فی بیرل پر آگئی۔

چند ماہ کے دوران مہنگائی میں کمی آئے گی: مفتاح اسماعیل

اس کے علاوہ امریکی خام تیل ویسٹ ٹیکساس انٹرمیڈیٹ (ڈبلیو ٹی آئی) کی قیمت 3.2 فیصد یعنی 3.19 ڈالر کمی کے بعد 96.31 ڈالر فی بیرل پر آگئی ہے۔11 اپریل 2022 کے بعد سے اب تک کی تیل کی کم ترین قیمتیں ہیں۔ رپورٹ کے مطابق قیمتوں میں حالیہ کمی کی وجوہات عالمی سطح پر کساد بازاری کے خدشات، دیگر کرنسیوں کے مقابلے میں ڈالر کی بلند قدر، چین میں کورونا وائرس کے نئے کیسز سامنے آنا اور ناروے میں ورکرز کی ہڑتال کی وجہ سے تیل کی پیداوار میں متوقع کمی ہیں۔

قبل ازیں مسلم لیگ ن کی نائب صدرمویم نواز نے لاہور میں ضمنی الیکشن کے حلقے پی پی 158 میں خطاب کرتے ہوئے کہا تھا کہ اگر بین الاقوامی مارکیٹ میں پیٹرول کی قیمت ایک ڈالر بھی کم ہوئی تو شہباز شریف اسی دن پیٹرول کی قیمت کم کردیں گے۔

 

پبلک اکاؤنٹس کمیٹی نے حکومت کوپٹرولیم مصنوعات کی قیمتیں کم کرنے کی سفارش کردی

وفاقی وزیر خزانہ مفتاح اسماعیل بی ایک پریس کانفرنس کے دوران یقین دلا چکے ہیں کہ اگر عالمی سطح پر تیل سستا ہوا تو پاکستان میں جو کرسکتے ہیں وہ کریں گے۔انہوں نے کہا تھا کہ میں نے پہلے دن سے کہا کہ پیٹرول کی قیمت بڑھانا لازمی ہے، یہ فیصلے وزیراعظم کے لیے بہت مشکل تھے، ہم ایک ایک چیز کی قیمت کے ذمے دار ہیں چاہے ہماری غلطی ہو یا نہ ہو، ہماری ذمہ داری ہےکہ ملک کو ڈیفالٹ سے بچائیں، آج اللہ کی مہربانی سے کہہ سکتے ہیں کہ پاکستان کو دیوالیہ ہونے سے بچایا۔