fbpx

ابرار الحق کی مشکلات کم نہ ہوئیں، عدالت نے وفاق کو کیا حکم دیا؟

ابرار الحق کی مشکلات کم نہ ہوئیں، عدالت نے وفاق کو کیا حکم دیا؟

باغی ٹی وی کی رپورٹ کے مطابق اسلام آباد ہائیکورٹ نے ابرار الحق کی بطور چیئرمین پاکستان ریڈ کریسنٹ سوسائٹی تعیناتی پر حکم امتناع برقراررکھتے ہوئے وفاق کو 5 دسمبر تک جواب جمع کرانے کی مہلت دتے ہوئے سماعت ملتوی کر دی۔

اسلام آباد ہائی کورٹ کے چیف جسٹس اطہر من اللہ نے سابق چیئرمین ریڈ کریسنٹ سوسائٹی سعید الہی کی درخواست پر سماعت کی، دوران سماعت ڈپٹی اٹارنی جنرل طیب شاہ عدالت میں پیش ہوئے اور جواب جمع کرانے کے لیے مزید وقت دینے کی استدعا کی، عدالت نے ابرار الحق کی تعیناتی کا نوٹیفکیشن آئندہ سماعت 5 دسمبر تک معطل رہنے کا حکم دیا اور وفاق کی جواب جمع کرانے کی استدعا منظور کر لی۔

عدالت نے جمعرات تک فریقین کو جواب جمع کرانے کی ہدایت کی.عدالت نے وفاق کو بذریعہ اسٹیبلشمنٹ ڈویڑن اور ابرار الحق سمیت دیگر فریقین کو دوبارہ نوٹس جاری کرتے ہوئے کیس کی مزید سماعت آئندہ جمعرات پانچ دسمبر تک ملتوی کر دی ہے،عدالت نے ابرار الحق کی تعیناتی کا نوٹیفکیشن معطل برقرار رکھتے ہوئے سابق چیئرمین سعید الہٰی کو عہدے پر بحال رکھا ہے۔

ابرار الحق کے لئے بڑی مشکل، عدالت میں درخواست دائر

واضح رہے کہ سابق چیئرمین ریڈکریسنٹ سعیدالہٰی نےابرارالحق کی تعیناتی چیلنج کی تھی،عدالت میں دائر درخواست میں کہا گیا ہے کہ ابرارالحق کو 3 سال کیلئے چیئرمین مقررکیا گیا ہے، بطورچیئرمین میری تعیناتی 3سال کیلئے کی گئی تھی، میری تعیناتی کی مدت مکمل ہونے سے قبل ابرارالحق کی تعیناتی غیرقانونی ہے،مدت 9 مارچ 2020  میں مکمل ہورہی ہے، تعیناتی کی مدت مکمل ہونے سے قبل ابرارالحق کی تعیناتی غیرقانونی ہے،

ابرارالحق نے ایسا کیوں کیا۔۔عوام غم و غصے کا شکار

واضح رہے کہ چیئرمین ہلال احمر ڈاکٹر سعید الٰہی کو عہدے سے ہٹا کر ابرارالحق کو تعینات کر دیا گیا ہے،

ابرارالحق کو چیئرمین ہلال احمر تعینات کئے جانے پر عوامی حلقوں سے حکومت پر تنقید کی جا رہی ہے کہ وزیراعظم عمران خان میرٹ میرٹ کہا کرتے تھے اور اب انہوں نے ڈاکٹر سعید الہیٰ کو ہٹا کر ابرارالحق کو چیئرمین ہلال احمر لگا دیا