fbpx

عدالت کا پنجاب حکومت کو ترمیم شدہ نکاح نامےکودستیابی یقینی بنانے کا حکم

لاہور ہائیکورٹ نے پنجاب حکومت کو صوبے بھر کے نکاح رجسٹرارز کو ترمیم شدہ نکاح نامے کی تیاری اور دستیابی یقینی بنانے کا حکم دے دیا۔

باغی ٹی وی : جسٹس فاروق حیدر نے درخواست گزار خاتون مہر شوکت کی درخواست پر حکم جاری کیا خاتون مہر شوکت نے شوہربہزاد قریشی کے خلاف نکاح نامے میں پہلی شادی کا نہ لکھنے پر عدالت سے رجوع کیا۔

دبئی میں گلف انفارمیشن ٹیکنالوجی نمائش پاکستانی اسٹالز توجہ کا مرکز

خاتون کا موقف تھا کہ بہزاد قریشی نے نکاح نامے میں اپنی امریکا میں ہونے والی شادی اور طلاق کو چھپایا، اس لیے اس کے خلاف مقدمہ درج کیا جائے۔

عدالت میں بہزاد قریشی نے موقف اختیار کیا کہ نکاح نامے میں کہیں یہ نہیں پوچھا گیا کہ پہلی شادی ہوئی تھی یا نہیں؟ نکاح نامے کے کالم 21 میں صرف پہلی شادی سے بچوں کے متعلق پوچھا گیا ہے جس کا جواب نفی میں لکھا۔

عدالت نے فیصلے میں لکھا کہ نکاح نامہ کے کالم نمبر 5 میں دلہن کے کنوارہ، مطلقہ یا بیوہ ہونے کا سوال ہے لیکن دلہا سے متعلق ایسا سوال نہیں ہے، عدالت نے شک کا فائدہ دے کر دلہا کے خلاف اندراج مقدمہ کی درخواست خارج کر دی۔

پیراگون ہاؤسنگ سوسائٹی ریفرنس،،نیب گواہان پیش نہ ہونے پرعدالت کا اظہار برہمی

عدالت نے قرار دیا کہ نکاح نامے میں دلہن کے کنوارہ، مطلقہ یا بیوہ ہونے کا سوال پوچھا گیا ہے لیکن دلہا سے متعلق ایسا سوال نہیں ہے۔

یاد رہے اس سے قبل لاہور ہائیکورٹ نے پہلی بیوی کی اجازت کے بغیر دوسری شادی کرنے والےشخص کی سزا کیخلاف اپیل خارج کر دی اور 6 ماہ کی قید اور 5 لاکھ روپے جرمانے کی سزا برقرار رکھی تھی۔

ملزم غلام حسین کو پہلی بیوی کی اجازت کےبغیر دوسری شادی پر 20 اکتوبر 2020ءکو مجسٹریٹ نے سزا سنائی تھی سیشن عدالت نے 22 دسمبر 2021ء کو غلام حسین کی اپیل خارج کرتے ہوئےمجسٹریٹ کی جانب سے دی گئی سزا بحال رکھی تھی جس کیخلاف غلام حسین نے لاہور ہائیکورٹ سے رجوع کیا تھا۔

اسلام آباد ہائیکورٹ نے وزارت داخلہ ، خارجہ کے ڈائریکٹرز کو ایک گھنٹے میں طلب کر لیا

4 فروری کو غلام حسین کو گرفتار کرلیا گیا تھا،ملزم کے وکیل کا مؤقف تھا کہ اس کیس میں سزا دینے کا اختیار فیملی عدالت کے پاس ہے مجسٹریٹ کے پاس نہیں جبکہ سرکاری وکیل نے بتایاکہ مجسٹریٹ نے قانون کے مطابق سزا دی۔