fbpx

افغان طالبان نے11ستمبر کوکابینہ کی تقریب حلف برداری ملتوی کردی: روسی میڈیا کادعویٰ

ماسکو:افغان طالبان نے11ستمبر کوکابینہ کی تقریب حلف برداری ملتوی کردی: روسی میڈیا کادعویٰ ،اطلاعات کے مطابق روسی میڈیا کا کہنا ہے کہ طالبان نے 11 ستمبر کو افغانستان کی عبوری کابینہ کی تقریب حلف برداری ملتوی کردی۔

گزشتہ دنوں طالبان نے افغانستان کی عبوری حکومت کا اعلان کیا تھا جس کے مطابق ملا محمد حسن اخوند افغانستان کے عبوری وزیراعظم ہوں گے جب کہ ملا عبدالغنی برادر اور مولوی عبدالسلام حنفی نائب وزرائے اعظم ہوں گے۔

ان کے علاوہ بھی طالبان کی جانب سے وزرا اور اداروں کے سربراہان کی فہرست جاری کی گئی تھی۔اس کے بعد خبریں سامنے آئی تھیں کہ نئی افغان حکومت نائن الیون کے 20 سال مکمل ہونے کے روز حلف اٹھائے گی۔

تاہم اب روسی نیوز ایجنسی نے دعویٰ کیا ہے کہ طالبان نے 11 ستمبر کو عبوری کابینہ کی تقریب حلف برداری ملتوی کردی ہے۔

دوسری جانب طالبان کے ثقافتی کمیشن کے رکن انعام اللہ سمنگانی نے ٹوئٹر پر جاری بیان میں 11 ستمبر کو تقریب حلف برداری کی خبر کو افواہ قرار دیا۔

انہوں نے کہا کہ گزشتہ دنوں کابینہ کا اعلان منسوخ کیا گیا تھا اور پھر بعدازاں قیادت کی منظوری کے بعد نئی کابینہ کے ناموں کا اعلان کیا گیا۔

انعام اللہ سمنگائی کا کہنا تھا کہ کابینہ نے اپنا کام شروع کردیا ہے اور 11 ستمبر کو تقریب حلف برداری کی خبریں درست نہیں۔

یاد رہےکہ آج پاکستان کے سابق وزیرداخلہ سینیٹررحمان ملک بھی ان خدشات کااظہارکرچکے ہیں کہ امریکا افغان طالبان کی حلف برداری کی تقریب پرحملہ کرکے طالبان لیڈروں کا مارسکتا ہے ،

ذرائع نے دعویٰ کیا ہے شاید یہی وہ وجوہات ہوسکتی ہیں جن کی بنا پریہ تقریب ملتوی کی گئی ہے