fbpx

افغانستان کی حکومت کو کیسے قانونی حیثیت دی جا سکتی؟ اشرف غنی کا مشورہ

افغانستان کی حکومت کو کیسے قانونی حیثیت دی جا سکتی؟ اشرف غنی کا مشورہ

سابق افغان صدر اشرف غنی نے غیر ملکی میڈیا کو انٹرویومیں کہا ہے کہ پندرہ اگست کی صبح تک گمان نہیں تھا یہ میرا افغانستان میں آخری دن ہو گا

اشرف غنی کا کہنا تھا کہ افغانستان چھوڑنے سے پہلے نہیں جانتا تھا کہ کہاں جائیں گے،کابل چھوڑنے کا فیصلہ منٹو ں میں کیا گیا تھا،پندرہ اگست کو صدارتی محل پر تعینات سیکیورٹی ہار مان گئی تھی اگر میں اسٹینڈ لیتا تو یہ سب مارے جاتے،کابل کو بچانے کے لیے اپنے تئیں قربانی دینے کا سوچا صدارتی محل پر تعینات سیکیورٹی میں میرے دفاع کی صلاحیت نہیں تھی،بد قسمتی سےمجھے مکمل اندھیرے میں رکھا گیا ،یہ افغانستان کا نہیں امریکا کا مسئلہ تھا،مجھے قربانی کا بکرا بنایا گیا،میری ساری زندگی کی محنت برباد ہو گئی افغانستان چھوڑنے پر افغان عوام کے غصے کو سمجھتا ہوں،

اشرف غنی کا مزید کہنا تھا کہ میں نے اپنی زندگی میں کبھی امریکا سمیت کسی ملک کے لیے کام نہیں کیا۔دوسرے لیڈروں کے برعکس انہیں امریکہ، نیٹو یا کسی دوسرے ملک سے پیسے نہیں ملے ، طالبان پناہ کے بغیر، مدد کے بغیرکبھی کامیاب نہیں ہو سکتے تھے۔

سابق صدر اشرف غنی نے طالبان سے مطالبہ کیا ہے کہ وہ حکومت کو قانونی حیثیت دینے کے لیے لویہ جرگہ بلائیں دنیا کی اقوام لویہ جرگہ کے بغیر طالبان کو تسلیم کرنے سے گریز کریں گی۔ انہوں نے لویہ جرگہ کو ایک جمہوری ادارہ قرار دیا۔ اشرف غنی کا مزید کہنا تھا کہ یہ بات قابل فہم ہے کہ افغانستان کے عوام افغانستان پر کنٹرول حاصل کرنے اور اس ملک کے حالات پر طالبان سے ناراض ہیں۔

اشرف غنی 15 اگست کو کابل سے روانہ ہوئے تھے اور روسی سفارت خانے کے حکام کے مطابق ہیلی کاپٹر میں لاکھوں ڈالر لے گئے تھے، لیکن اشرف غنی نے اب ایک بیان جاری کیا ہے جس میں الزامات کی تردید کرتے ہوئے کہا گیا ہے کہ وہ اپنے اور اپنے قریبی ساتھیوں کے اثاثوں کا احتساب کرنے کے لیے تیار ہیں اور اقوام متحدہ یا دیگر اداروں کی جانب سے آزاد انکوائری کا خیر مقدم کرتے ہیں۔

مریم نواز کی خواہش؟ عید پر کتنی ہوں گی چھٹیاں؟ شیخ رشید کا بڑا اعلان

وزیرداخلہ بننے کا مطلب یہ نہیں کہ اوقات بھول جاؤں،،بارڈرپرجاوَں گا، شیخ رشید

لندن سے بانی متحدہ کو لاسکتا ہوں اور نہ ہی نوازشریف کو،شیخ رشید کی بے بسی

بھٹو کو پھانسی ہوئی تو کچھ نہیں ہوا،یہ لوگ بھٹو سے بڑے لیڈر نہیں، شیخ رشید

مقبوضہ کشمیر میں کسی دہشتگرد کے جانے کا سوال ہی پیدا نہیں ہوتا، شیخ رشید

بلاول جس دن پیدا ہوا عدم اعتماد پر ہی چل رہے ہیں، شیخ رشید

خیال رہے کہ افغانستان کے دارالحکومت کابل میں طالبان کے داخلے کے بعد سابق صدر اشرف غنی ملک سے فرار ہوگئے تھے ان کے فرار کے بعد رپورٹس سامنے آئیں تھیں کہ وہ تاجکستان فرار ہوئے تاہم تاجک وزارت خارجہ نے تردید کی تھی۔