fbpx

جنرل اسپتال میں ایک بیڈ پر دو مریض تھے جبکہ افضال احمد کو بھی مریض کے ساتھ لٹایا گیا. منیجر

جنرل اسپتال میں ایک بیڈ پر دو مریض تھے، افضال احمد کو بھی مریض کے ساتھ لٹایا گیا: منیجر

جنرل اسپتال انتظامیہ کی جانب سے لیجنڈ اداکار افضال احمد کو الگ بیڈ بھی نہ دیا گیا۔ اداکار افضال احمد کے منیجر رضوان نے نجی ٹی وی سے گفتگو کرتے ہوئے بتایا کہ گزشتہ شام افضال احمد کو برین ہیمریج کی وجہ سے جنرل اسپتال لایا گیا تھا، اداکار کے علاج کیلئے اسپتال انتظامیہ سے ایک پرائیوٹ کمرہ مانگا گیا تھا لیکن انتظامیہ کی جانب سے فراہم نہیں کیا گیا۔

منیجر نے کہا کہ جنرل اسپتال میں ایک ایک بیڈ پر دو دو مریض لیٹے ہوئے تھے اور افضال صاحب کو بھی ایک مریض کے ساتھ لٹا دیا گیا۔ انہوں نے مزید بتایا کہ 25 سال پہلے افضال احمد کو جسم کے دائیں حصے پر فالج ہوا تھا وہ بول نہیں سکتے تھے اور نہ چل سکتے تھے۔ منیجر کےمطابق بہن کے امریکا سے آنے کے بعد افضال احمد کی تدفین کل کی جائے گی جب کہ ان کے سوگواران میں تین بیٹیاں ہیں جوبیرون ملک رہائش پذیر ہیں۔
مزید یہ بھی پڑھیں؛
اسلام آباد میں مطلع ابرآلود، کراچی میں پارہ 12 ڈگری تک گرگیا
اسلام آباد سے قطر جانے والے مسافر کے پیٹ سے منشیات بھرے کیپسول برآمد
عمران خان کیخلاف توہین عدالت کی سماعت آج ہوگی
یاد رہے کہ اسپتال انتظامیہ کے مطابق اداکار افضال احمد کو برین ہیمریج کے باعث یکم دسمبرکو اسپتال لایاگیا تھا جہاں وہ جانبر نہ ہوسکے۔ چند سال پہلے افضال احمد کو فالج کا اٹیک ہوا تھا جس کے باعث وہ مشکلات میں زندگی گزار رہے تھے۔ اداکار افضال احمد اور قوی خان کی جوڑی نے شہرت حاصل کی، وہ افضال چٹہ کے نام سے مشہور ہیں، انہوں نے جزیرہ، چل سو چل سمیت متعدد ڈراموں اور 200 سے زائد فلموں میں کام کیا۔ ان کی مشہور فلموں میں شعلے، شریف بدمعاش، وحشی جٹ، عشق نچاوے گلی گلی اور دیگر فلمیں شامل ہیں۔