fbpx

بجلی تقسیم کار کمپنیوں کی ناقص کارکردگی؛ 1 سال میں قومی خزانے کو 292 ارب روپے کا نقصان

بجلی تقسیم کار کمپنیوں کی ناقص کارکردگی؛ 1 سال میں قومی خزانے کو 292 ارب روپے کا نقصان

نیشنل الیکٹرک پاور ریگولیٹری اتھارٹی نے اپنی سالانہ رپورٹ میں بجلی کی تقسیم کار کمپنیوں کی ناقص کارکردگی کا پول کھول دیا۔ نیپرا نے مالی سال 22-2021 میں بجلی کی تقسیم کار کمپنیوں کی سالانہ کارکردگی رپورٹ جاری کردی ہے۔ جس میں ڈسکوز کی ناقص کارکردگی کے حوالے سے کئی انکشافات کئے گئے ہیں۔

رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ بجلی کی تقسیم کار کمپنیوں نے ایک سال میں قومی خزانےکو تقریبا 292 ارب روپے کا نقصان پہنچایا، ملک کا 170 ارب روپے کا نقصان صرف کم وصولیوں کی مد میں کیا جب کہ لائن لاسز سے 122 ارب روپے کا ٹیکہ لگایا گیا۔ قومی خزانے کو سب سے زیادہ 63 ارب روپے کا نقصان پشاور الیکٹرک سپلائی کمپنی (پیسکو) نے پہنچایا، لوڈشیڈنگ میں بھی یہی کمپنی سرفہرست رہی ہے۔
مزید یہ بھی پڑھیں؛
پاکستان کو درپیش چیلنج سے نکال کر اپنے پاﺅں پر کھڑا کریں گے۔ وزیر اعظم
قیادت کرنے سے ہی آتی ہے کوئی نیچرل یا پیدائشی کپتان نہیں ہوتا. وسیم اکرم
عدالت نے معروف قانون دان لطیف آفریدی کے قتل کے ملزم کا جسمانی ریمانڈ منظور کرلیا
مس ایل سلواڈور کی مقابلہ حسن میں بٹ کوائن والے لباس میں شرکت
حافظ نعیم الرحمٰن الیکشن کمیشن پر الزامات نہ لگائیں،صوبائی الیکشن کمشنر
الیکشن کمیشن نے (ق) لیگ کو معاملہ جلد دیکھنے کی یقین دہانی کرادی
عوام نے نام نہاد مقبول لیڈرز کا پول کھول دیا ہے. بلاول بھٹو زرداری

رپورٹ میں مزید بتایا گیا کہ گزشتہ مالی سال کے دوران کرنٹ لگنے سے 196 قیمتی انسانی جانیں ضائع ہوئیں، جو کہ اس سے پچھلے سال کے مقابلے میں 11 فیصد زیادہ ہے۔ نیپرا نے بجلی کمپنیوں کی مایوس کُن کارکردگی کا تفصیلی احوال بتانے کے بعد تجویز دی ہے کہ ان کو صوبوں کے حوالے کر دیا جائے۔