fbpx

تاقیامت خلیفہ بلافصل صدیق اکبرؓکے مقام کوکوئی نہیں پہنچ سکتا،علامہ اورنگزیب

ملک بھر میں جلسے، جلوس، ریلیوں اور سیمینار منعقد کئے گئے ھیں،علامہ ربنوازحنفی
انبیاء کرامؑ کے بعدمومنین میں سب سے افضل مقام سیدنا صدیق اکبرؓکاہے،مدح صحابہؓجلوس سے خطاب
کراچی ہلسنّت والجماعت پاکستان کے زیر اہتمام خلیفہ اول سیدنا ابوبکر صدیقؓ کا یوم وفات 22 جمادی الثانی ملک بھر میں عقیدت و احترام سے جبکہ 5 فروری یکجہتی کشمیر قومی جوش و جذبے سے منایا گیا، اس موقع پر ملک بھر میں جلسے، جلوس، ریلیوں اور سیمینار منعقد کئے گئے، کراچی میں لسبیلہ چوک تاتبت سینٹرل پر عظیم الشان مدح صحابہؓ مطالباتی جلوس نکالاگیا،جس میں ہزاروں کی تعدادمیں علماء کرام،وکلاء،اسکول،کالجز،مدارس کے طلباء،عوام اہلسنّت اورکارکنان نے بھرپورایمانی غیرت وحمیت کے ساتھ شرکت کی،کراچی، اسلام آباد، کوئٹہ، لاھور، پشاور اور مختلف شہروں میں خطاب کرتے ہوئے علامہ محمد احمد لدھیانوی، علامہ اورنگزیب فاروقی، مولانا عبدالخالق رحمانی، مولانا مسعودالرحمن عثمانی، راو جاوید اقبال، مولانا اشرف طاہر، مولانا عبداللہ سندھی، مولانا رمضان مینگل، علامہ عطا محمد دیشانی، مولانا تصدق حسین، مولانا معاویہ اعظم،مولانارب نوازحنفی،مولاناتاج محمدحنفی سیدمحی الدین شاہ،مولاشکیل فاروقی،مولاناعادل عمر،مولاناعبدالرافع شاہ و و دیگر نے کہا کہ 22 جمادی الثانی کو عام تعطیل کا مطالبہ اہلسنت کا دیرینہ مطالبہ ہے، حکومت پاکستان و صوبائی حکومتیں عوام اہلسنّت کے دیرینہ مطالبے کو مسلسل نظر انداز کر رہی ہیں، جس سے عوام اہلسنّت میں احساس محرومی پیدا ہو رہا ہے، سیدنا ابوبکر صدیق ؓکی تکفیر یا توہین عوام اہلسنت کسی بھی صورت برداشت کرنے کو تیار نہیں ہیں، قومی سلامتی کے ادارے اس توہین اور تکفیر کو روکنے کے لئے ملک میں مؤثر قانون سازی کریں، توہین صحابہ کا سلسلہ نہ رکا اور قانون سازی نہ کی گئی تو پرامن و نہتے عوام اہلسنت اسلام آباد کا بھی رخ کر سکتے ہیں رہنماوں نے مزید کہا کہ سیدنا صدیق اکبر اور مظلوم کشمیری عوام سے آج ملک بھر کے عوام نے اظہار یکجہتی کیا ہے، حکمران عوام کی آواز سنیں، تحفظ اساس بنیاد اسلام بل کے راستے میں جو رکاوٹیں کھڑی کی گئی ہیں ان رکاوٹوں کو دور کر کے اس بل کو منظور کیا جائے، سارے صحابہ اسلام کی بنیاد جبکہ ابوبکر صدیق رض سنگ بنیاد ہیں، کسی کو اسلام کی بنیادیں کھوکھلی کرنے کی اجازت نہیں ہونی چاہئیے، ملک بھر میں نکلنے والے جلوسوں کے موقع پر شرکاء نے کشمیری پرچم بھی ہاتھوں میں تھامے ہوئے تھے، زیراہتمام خلیفہ بلافصل،سسررسولؐ،امام الصحابہؓ اول المسلمین سیدناصدیق اکبرؓکایوم وفات(22جمادی الثانی)ملک بھرمیں عقیدت واحترام سے منایاگیا،سیدناصدیق اکبرؓکے فضائل ومناقب عوام الناس تک پہنچانے کیلئے ملک بھرمیں سیمینارز،تقاریب،جلسے اوریوم صدیق اکبرؓسرکاری سطح پرنہ منائے جانے اورعام تعطیل نہ کرنے کیخلاف شہر شہرقریہ قریہ مدح صحابہؓ مطالباتی جلوس نکالے گئے، قائدین نے کہاکہ امام الصحابہؓسیدناصدیق اکبرؓکامقام روئے زمین پراتنابلندہے کہ تمام انبیاء کرام ؑکے بعدسب سے بلنداوراعلیٰ وارفع اگرکسی کامقام ہے تووہ خلیفہ بلافصل سیدناصدیق اکبرؓکاہی ہے،قیامت تک آنیوالی امت سیدناصدیق اکبرؓکی گردتک بھی نہیں پہنچ سکتی،حضوراکرمؐنے اپنی حیات مبارکہ میں ہی سیدناسیدیق اکبرؓ کومصلیٰ امامت پر فائزکرکے قیامت تک آنیوالی امت کوبتلادیاکہ حضوراکرمؐ کے دنیاسے پردہ فرماجانے کے بعدقیامت تک امت کیلئے سیدناصدیق اکبرؓہی امام اول اورخلیفہ بلافصل ہیں،جولوگ سیدناصدیق اکبر ؓکوفراموش کرکے کسی اورکے امام ہونے کادعویٰ کرتے ہیں وہ دراصل صدیق اکبرؓ نہیں بلکہ حضوراکرمؐ کاانکارکرتے ہیں۔

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.