fbpx

امن میں حصہ دار ہوں گے، جنگ میں نہیں، افغانستان بارے وفاقی وزیر کا بیان

امن میں حصہ دار ہوں گے، جنگ میں نہیں، افغانستان بارے وفاقی وزیر کا بیان

باغی ٹی وی کی رپورٹ کے مطابق وفاقی وزیر اطلاعات فواد چودھری نے کہا ہے کہ افغانستان میں بدلتی صورتحال پر گہری نظر ہے،

فواد چودھری کا کہنا تھا کہ کوشش ہے کابل میں پر امن اور اتفاق رائے پر مبنی نظام حکومت قائم کیا جائے،کابل میں اتفاق رائے سے حکومت نہ بنی توہاکستان میں اس کے اثرات نہیں آنے دیں گے،ہماری افغان پالیسی پاکستان کے مفاد پرمبنی ہے،وزیر اعظم عمران خان کہہ چکے ہیں کہ ہم امن میں حصہ دار ہوں گے، وزیر اعظم عمران خان کہہ چکے ہیں کہ ہم جنگ میں حصہ دار نہیں ہوں گے،

فواد چوھدری کا مزید کہنا تھا کہ پاکستان کی سرزمین افغانستان کے خلاف استعمال نہیں ہو رہی،امید ہے کہ افغانستان کی سرزمین پاکستان کے خلاف استعمال نہیں ہوگی،سیاسی پارلیمانی قیادت عدم مداخلت کے اصول پر متفق ہے،

واضح رہے کہ افغانستان میں حکومتی فورسز اور طالبان میں جھڑپیں جاری ہیں طالبان نے افغانستان کے مزید 2 اضلاع پر قبضہ کرلیا ہے- پل خمری، تعلقان ، قلعہ نو، شبرخان، میدان شہر، غزنی، قندھار اورلشکرگاہ میں لڑائی جاری ہے افغان صوبہ نمروزکے شہردل آرام میں کار بم دھماکہ ہو جس کے نتیجے میں افغان سیکیورٹی فورسزکے15اہلکارہلاک ہو گئے ہیں-

واضح رہے کہ غزنی اور قندھار سمیت کئی بڑوں شہروں پر قبضہ کے لیے گھمسان کا رن جاری ہے، کابل سمیت کئی بڑے شہروں میں بے یقینی کی صورت حال ہے قندھار، قندوز، کابل، تخار، بامیان، پروان اور بلخ صوبوں میں طالبان نے افغان فورسز پر حملے کئے ہیں –

افغانستان فورسز نے 200کے قریب طالبان جنگجووں کو مارنے کا دعویٰ کیا ہے جبکہ طالبان نے حکومتی فورسز کے دعوے کو مسترد کردیا ہے اور دعویٰ کیا ہے کہ قندھار شہر میں پولیس اسٹیشن اور کئی چیک پوسٹوں کا قبضہ حاصل کر لیا ہے۔صوبہ قندوز میں حکومتی فورسز کے دو ہیلی کاپٹر گر کر تباہ ہو گئے۔ صوبہ پکتیکا میں سکیورٹی اہلکار مزاحمت کئے بغیر طالبان کے ساتھ شامل ہو گئے۔