fbpx

امریکا2023 کے آخر تک تمام کیمیائی ہتھیاروں کا مکمل خاتمہ کرنے کا ارادہ رکھتا ہے پینٹاگان

امریکی محکمہ دفاع پینٹاگان نے اعلان کیا ہے کہ امریکا 2023 کے آخر تک تمام کیمیائی ہتھیاروں کا مکمل خاتمہ کرنے کا ارادہ رکھتا ہے۔

باغی ٹی وی : غیرملکی میڈیا کے مطابق کیمیائی اور حیاتیاتی تحفظ کے پروگرام کی ڈپٹی اسسٹنٹ سیکرٹری برائے دفاع برانڈی فین نے ایک سمپوزیم کے دوران کہا کہ قانون سازی کے تحت مخصوص ذمہ داریوں کے حوالے سے ہمیں 31 دسمبر 2023 کی ڈیڈ لائن کو مدنظر رکھنا چاہیے۔

اسلاموفوبیا پر قابو پانے کیلئے عالمی مکالمہ ہونا چاہیے،منی لانڈرنگ سے غریب ملکوں کی معیشت پر دباؤ…

انہوں نے کہا کہ کانگریس نے ہمیں اس تاریخ تک کیمیائی ہتھیاروں کو تلف کرنے کا پابند کیا ہے لیکن حقیقت میں ہم ستمبر 2023 تک اس عمل کو مکمل کرنے کے لیے کام کر رہے ہیں جیسا کہ کیمیائی ہتھیاروں کے کنونشن نے بیان کیا ہے۔

انہوں نے اس بات پر زور دیا کہ ہماری قومی سلامتی کے لیے ضروری ہے کہ اس ڈیڈ لائن کو پورا کریں امریکا کیمیائی ہتھیاروں کے اسلحہ خانے کو تباہ کرنے میں پیش رفت جاری رکھے ہوئے ہے جلد از جلد ہم کیمیائی ہتھیاروں کو محفوظ طریقے سے تلف کر دیں گے۔

وزیراعظم پاکستان جناب عمران خان کا جنرل اسمبلی سے خطاب

پینٹاگان کے عہدیدار کا کہنا تھا کہ امریکا اب تک اپنے 97 فیصد کیمیائی ہتھیاروں کو تباہ کرچکا ہے۔

یہ بات قابل ذکر ہےکہ کیمیائی ہتھیاروں کی ممانعت پر کنونشن 1997 میں قائم کیا گیا یہ شرط عائد کی گئی تھی کہ پورے کیمیائی ہتھیاروں کے اسلحہ کو 10 سالوں کے اندر اندر تباہ کرنا ہوگا لیکن امریکا نے کئی بار اپنے ہتھیاروں کی تباہی کی تکمیل کو ملتوی کیا ہے۔

جنوبی ایشیا میں امن کا دارو مدار مسئلہ کشمیر کے حل میں مضمر ہے ، وزیراعظم عمران خان کا جنرل اسمبلی…

شاہ محمود کی بیلجیئم کی نائب وزیر اعظم و وزیر خارجہ سے ملاقات، افغانستان کی صورتحال پر تبادلہ خیال

Facebook Notice for EU! You need to login to view and post FB Comments!