fbpx

امریکا نے بھارتی کمپنی پر پابندی عائد کر دی

امریکا نے بھارتی کمپنی پر پابندی عائد کر دی،امریکہ نے دو چینی کمپنیوں پر پابندی عائد کر دی ہے ہانگ کانگ، ایران اور متحدہ عرب امارات میں قائم تیل کمپنیوں پر بھی پابندی عائد کر دی گئی ہے۔

باغی ٹی وی : بھارتی میڈیا کے مطابق بھارتی وزیر خارجہ ایس جے شنکر کے دورے کے ایک روز بعد ہی امریکا نے امریکا نے بھارتی کمپنی پر پابندی عائد کر دی ہے-

امریکی کوہ پیما دنیا کی آٹھویں بلند ترین چوٹی سرکرکے واپس آنے کے دوران گہری کھائی…

رپورٹس کے مطابق امریکہ نے ایرانی پیٹرولیم اور پیٹرو کیمیکل مصنوعات کی نقل و حمل اور مالیاتی لین دین میں سہولت فراہم کرنے پر چین، ہانگ کانگ، ہندوستان اور متحدہ عرب امارات میں مقیم متعدد کمپنیوں پر پابندیاں عائد کیں۔

امریکی محکمہ خارجہ کے مطابق بھارت کی نجی پیٹرولیم کمپنی نے ایران نے میتھول اور بیس آئل سمیت لاکھوں ڈالر مالیت کے پیٹرو کیمیکلز پراڈکٹس خریدیں جو چین بھیجی گئیں۔

امریکی محکمہ خارجہ کا کہنا ہے کہ ہم نے ایرانی بروکرز کو ٹارگٹ کرتے ہوئے جنوبی اور مغربی ایشیا میں انہیں معاونت فراہم کرنے والے بین الاقوامی گروپ پر معاشی پابندیاں عائد کیں، وزارت خارجہ نے خاص طور پر چین میں مقیم دو کمپنیوں پر پابندی عائد کی ہے-

زاہدان میں مسلح افراد کا تھانے پر حملہ، 19افراد جان سے گئے:ہلاک شدگان کی تعداد 100 سے تجاوز کرگئی

انٹونی بلنکن نے ایک بیان میں کہا کہ محکمہ خزانہ ہانگ کانگ میں مقیم آٹھ دیگر کمپنیوں پر بھی پابندیاں عائد کر رہا ہے، ایران، ہندوستان اور متحدہ عرب امارات، ایران کے ساتھ پیٹرو کیمیکل کی تجارت کے لیے۔

درحقیقت ایران کی تیل کی معیشت امریکی پابندیوں سے شدید متاثر ہو رہی ہے اور ملک کی معیشت بھی متاثر ہو رہی ہے۔ حال ہی میں ایسی کئی رپورٹس منظر عام پر آئی ہیں جن میں دعویٰ کیا گیا ہے کہ ایران جوہری میدان میں نئی ​​ٹیکنالوجی تیار کر رہا ہے جس سے ایٹمی جنگ کا خدشہ بڑھ جائے گا۔ ساتھ ہی یہ بات بھی سامنے آئی کہ ایران جلد ہی ایک جوہری معاہدے پر دستخط کر سکتا ہے جس سے اس کے خلاف امریکی پابندیاں ختم ہو سکتی ہیں۔

تاہم ایران کو اس معاہدے پر دوبارہ غور کرتے دیکھ کر امریکہ نےایک بار پھر سخت رویہ اختیار کرتے ہوئےایران کے ساتھ تیل کا کاروبار کرنے والی کمپنیوں پر پابندی لگا دی۔ امریکی محکمہ خزانہ نے خاص طور پر ان کمپنیوں کے نیٹ ورک پر پابندی لگا دی ہے جو کروڑوں ڈالر کی ایرانی پیٹرو کیمیکلز اور پیٹرولیم مصنوعات جنوبی اور مشرقی ایشیا کو فروخت کرنے میں ملوث ہیں۔

امریکی کانگریس ارکان کا یوکرین کو 12 ارب ڈالر فوجی اوراقتصادی امداد دینے پراتفاق