fbpx

امریکی فضائیہ کا مہنگا ترین بمبار طیارہ حادثے کا شکار

امریکی فضائیہ کا مہنگا ترین بمبار طیارہ بی 2سٹیلتھ ہنگامی لینڈنگ کے دوران رن وے پر حادثے کا شکار ہوگیا۔

باغی ٹی وی : ایئر فورس گلوبل سٹرائیک پبلک افیئرز یونٹ نے بتایا کہ طیارہ معمول کے تربیتی مشن پر تھا کہ اسے” پرواز کے دوران خرابی” کے باعث تقریبا صبح 12:30 بجے امریکی ریاست میسوری کے ایئرپورٹ پر لینڈ کرنا پڑا۔

دونوں پائلٹ محفوظ رہے حادثے کے سبب کوئی جانی نقصان نہیں ہوا اور نہ آگ بھڑکی تاہم طیارے کو معمولی نقصان پہنچا ہے ایئر فورس گلوبل سٹرائیک پبلک افیئرز یونٹ کا کہنا ہے کہ واقعہ کی تحقیقات کی جا رہی ہیں۔


امریکی فضائیہ کے پاس صرف21 بی2 بمبار طیارے تھے جن میں ایک2008 میں حادثے کا شکار ہوگیا تھا اور اب 20 فضائیہ کے استعمال میں ہیں اس طیارے کی قیمت 2 بلین ڈالر ہے۔

دو سے تین سالوں کے دوران نظام شمسی سے باہر زندگی کے آثار دریافت کر لیں گے سائنسدانوں کا دعویٰ

ذرائع ابلاغ کا کہنا ہے کہ B2 کو ایسے مواد سے تیار کیا گیا ہے جو کسی حادثے کا شکار ہونے پر انتہائی خطرناک ہو سکتا ہے یہ طیارہ روایتی اور ایٹمی ہتھیار لے جانے کے صلاحیت رکھتا ہے اور اس میں انتہائی جدید ٹیکنالوجی استعمال کی گئی ہے۔

رپورٹس کے مطابق حالیہ حادثے کے بعد تمام بی2 طیاروں کو کم سے کم دو ماہ کیلئے گراؤنڈ کر دیا گیا ہے ابتدائی طور پر یہی معلوم ہوسکا ہے کہ تیز بارش کے سبب رفتار اور اونچائی کا حساب لگانے والے سینسرز متاثر ہوئے جس کے باعث حادثہ پیش آیا۔

کابل ائیر پورٹ پر رہ جانیوالے امریکی کتوں کو نیا ٹھکانہ مل گیا

یہ واقعہ جس میں B2 شامل تھا صبح 12.30 بجے کے قریب ہوا اور عارضی طور پر پرواز کی پابندی سے تمام سمتوں میں چھ میل اور فیڈرل ایوی ایشن ایڈمنسٹریشن کے زیر اہتمام زمین سے 8000 فٹ پر واقع ہوا۔

ایف اے اے نے کہا کہ یہ پابندی حادثے کی تفتیش کے لیے محفوظ ماحول فراہم کرنے کی اجازت دے گی اور 17 ستمبر کو رات 8 بجے اٹھائی جائے گی یہ ابھی تک معلوم نہیں ہے کہ وائٹ مین بیس پر B2 بمبار کو کس حد تک نقصان پہنچا۔ کے ایم بی سی کے مطابق یہ طیارہ 1993 سے اڈے پر موجود ہے۔

یو اے ای نے 15 اداروں سمیت 38 افراد کو بلیک لسٹ کر دیا