fbpx

عامر خان نے پہلی بار بتا دیا کہ انکی فیملی نےکس قدر غربت میں زندگی گزاری

عامر خان بالی وڈ کے معروف پرڈیوسر طاہر حسین کے صاحبزادے ہیں.عامر خان نے ھال ہی میں ایک انٹرویو کے دوران اپنے بچپن کے دنوں کی پسماندگی کو یاد کیا. عامر خان نے کہا کہ میرے والد ایک بڑے پرڈیوسر تھے انہوں نے بہت ہٹ فلمیں بھی بنائیں لیکن انہوں نے پیسہ نہیں بنایا. جب آپ ایک بڑے پرڈیوسر کے بیٹے ہوتے ہیں تو لوگوں‌کو لگتا ہے کہ آپ بہت امیر ہیں. انہوں نے کہا کہ میرے والد بالکل بھی اچھے بزنس مین نہیں تھے میرے والد ہمیشہ قرض میں رہتے تھے اور انہیں 1986 کی فلم لاکٹ بنانے میں 8 سال لگے اور ان کے پیسے پھنس گئے۔میرے والد نے بہت سارے قرض لے رکھے تھے اور اس وقت شرح سود 36% تھی اور ایک وقت ایسا آیا کہ ہم تقریباً بے گھر ہونے

والے تھے۔ میں جس اسکول میں پڑھ رہا تھا اس کی فیس کم تھی، یہ تھی چھٹی جماعت کی 6 روپے ، ساتویں جماعت کی 7 روپے ، آٹھویں جماعت 8 روپے ،دسویں جماعت کےلئے 10 روپے. ہمارے گھر کے حالات بہت خراب تھے اس لئے ہم لوگ وقت پر فیس نہیں ادا کر پاتے تھے یوں وقت پر فیس ادا نہ کرنے والوں کا نام سکول کی اسمبلی میں لیا جاتا تھا جس پر مجھے بہت شرمندگی ہوتی تھی. عامر خان نے مزید کہا کہ میں ٹینس کا بہت اچھا کھلاڑی تھا میں ٹورنامنٹ کھیلتا تھا مجھے انعام میں جو رقم ملتی تھی اپنے والد کو دے دیتا تھا اس کے بعد وہ مجھے ان پیسوں سے جوتے ٹی شرٹ خرید دیتے تھے .عامر نے کہا کہ "ہم مشکل وقت سے گزرے ہیں، میرے والد نے بہت جدوجہد کی ہے۔ ہم مالی طور پر بہت اچھے نہیں تھے لیکن ہمارا بچپن اچھا گزرا۔