آملہ صحت و توانائی کا خزانہ

آملہ دل بالوں اور آنکھوں کے لئے بے مفید ہے یونان اور عرب کے اطباء کے مطابق یہ دوسرے درجے میں رد اور خشک کہا ہے اس کو قابض ہابض مقوی معدہ مقوی اعصاب اور تبخیر کو دور کرنے والا کہا جاتا ہے آملہ معدہ اور آنتوں کی بعض بیماریوں میں خاص طور پر مفید ہے معدہ کے گیسٹرک جوس کی زیادتی اور غلیظ رطوبتوں کو جذب کر کے زائل کر دیتا ہے اس کے علاوہ ہر قسم کے اسہال دست بد ہضمی بھوک کی کمی متلی قے ابکائی ہچکی معدہ کی غلاظت پیچش اور معدہ آنتوں کی سوزش وغیرہ میں مفید ہے ان تمام بیماریوں کے لئے آملہ کا مربہ کا لگاتار استعمال نہایت مفید ہے آملہ دماغ کو طاقت دیتا ہے اور غلیظ بخارات کو سر کی طرف چڑھنے سے روکتا ہے ایسے سردرد میں مفید ہے جس میں آنکھوں کے آگے ااندھیرا چھاتا ہو چکر آتے ہوں آملہ بالوں کے لئے بھی انتہائی مفید ہے اس کے استعمال سے بال گھنے چمکدار اور سیاہ ہو تے ہیں رات کو پانی میں آملے بھگو دیں صبح اٹھ کر اس پانی سے سر دھو لیں آملہ پھیہھڑوں اور سینوں کو مضبوط بناتا ہے آملہ کا مربہ روزانہ دو عدد دانون کا استعمال سل اور ٹی بی سے محفوظ رکھتا ہے آملہ کو بہترین مقوی قلب مانا جاتا ہے کیونکہ آملہ مصفی خون ہے اور دل اور خون کا بہت گہرا تعلق ہے تقویت دل کے لئے آملہ کے مرکبات اور آملہ کا مربہ نہایت مفید ہیں روزانہ صبح سویرے ایک عدد آملہ کے مربے کا دانہ چاندی کے ورق میں لپیت کر کھانے اور اپور سے ایک گلاس دودھ پینے سے دل کو تقویت ملتی ہے آملہ لے جوس کے بھی بے شمار فوائد ہیں آملہ وٹامن سی کا خزانہ ہے اور ایک صحت مند رس ہے یہ قبض معدہ اور دمہ میں نہایت مفید ہے خون کی کمی دور کرتا ہے اس کے استعمال سے ہیمو گلوبن کی سطح بڑھ جاتی ہے قوت مدافعت بہتر بناتا ہے بہترین قبض کشا ہے

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.