fbpx

چائلڈ سولجرز پروینشن ایکٹ کی فہرست میں نام شامل کرنے کے امریکی اقدام پر پاکستان کا ردعمل آ گیا

چائلڈ سولجرز پروینشن ایکٹ کی فہرست میں نام شامل کرنے کے امریکی اقدام پر پاکستان کا ردعمل آ گیا

پاکستان نے چائلڈ سولجرز پروینشن ایکٹ کی فہرست میں نام شامل کرنے کے امریکی اقدام کومسترد کر دیا

ترجمان دفتر خارجہ کا کہنا تھا کہ چائلڈسولجرزپروینشن ایکٹ کی فہرست میں پاکستان کا نام بغیر کسی بنیاد کے شامل کیا گیا،پاکستان کسی بھی غیرریاستی مسلح گروپ کی حمایت نہیں کرتا ہے، پاکستان میں کوئی ادارہ بچوں کو بطور سپاہی بھرتی یا استعمال کرنے میں ملوث نہیں ،غیرریاستی مسلح گروہوں کے خلاف جنگ میں پاکستان کی کوششوں کوعالمی سطح پرتسلیم کیاجاتا ہے ،پاکستان کوچائلڈ سولجرزپروینشن ایکٹ کی فہرست میں شامل کرنا حقیقت پسندی سے انحراف ہے، رپورٹ کی اشاعت سے قبل امریکہ نے ہمارے کسی بھی سرکاری ادارے سے مشاورت نہیں کی

واضح رہے کہ امریکہ نے 18 سال سے کم عمر بچوں کا عسکری اداروں میں شامل ہونے پر اجلاس کیا ہے، اس اجلاس میں پاکستان اور ترکی پرCSPA ایکٹ کے تحت پاپندیاں لگائی گئی ہیں، یہ پاپندیاں 18 سال سے کم عمر بچون کو عسکری اداروں میں شامل کرنے کی وجہ سے لگائی گئی ہیں، اس پاپندی کے تحت ان مملک کو امن قائم رکھنے کیلئے جو امداد دی جاتی تھی وہ روک دی جائے گی.

اسلاموفوبیا کے حوالے سے وزیر اعظم عمران خان کا بیان قابل ستائش،ترک وزیر خارجہ کی تعریف

بھارت میں اسلاموفوبیا، مسلمانوں سے نفرت کی بازگشت خلیجی ممالک میں بحث جاری

بڑھتے ہوئے اسلامو فوبیا کو روکنے کے لئے پاکستان کا اقوام متحدہ سے بڑا مطالبہ

دہلی فسادات اور 2002 کے گجرات فسادات میں گہری مماثلت،ہندوؤں کی دکانیں ،گھر کیوں محفوظ رہے؟ سوال اٹھ گئے

دہلی فسادات، کوریج کرنیوالے صحافیوں کی شناخت کیلیے اتروائی گئی انکی پینٹ

دہلی، اجیت دوول کا دورہ مسلمانوں کو مہنگا پڑا، ایک اور نوجوان کو مار دیا گیا

دہلی فسادات میں امت شاہ کی پرائیویٹ آرمی ملوث،یہ ہندوآبادی پر دھبہ ہیں، سوشل ایکٹوسٹ جاسمین

دہلی پولیس کا دہلی فسادات میں مارے گئے لوگوں کی مکمل معلومات دینے سے انکار

کینیڈین وزیرا عظم سے کہوں گا یہ ان کے معاشرے کا امتحان ہے،شاہ محمود قریشی

اجلاس میں انسانوں کی سمگلنگ پر بھی رپورٹ پیش کی گئی ہے، اس رپورٹ میں ان ملکوں کی فہرست دی گئی ہے جن سے سمگلنگ ہو رہی ہے، اس رپورٹ میں ایک سال میں ہونے والی سمگلنگ کو دیکھا گیا ہے، یہ رپورٹ یکم اپریل 2020 تا 31 مارچ 2021 تک کی ہے، حکومتی سیکورٹی اداروں کے علاوہ حکومت کے زیرنگرانی عسکری اداروں میں شامل ہونے والے بچوں کی رپورٹ پیش کی گئی ہے.CSPA 2021 کی لسٹ‌ میں افغانستان، برما، ڈیموکریٹیک ریپبلک آف کانگو، ایران، عراق، لیبیا، مالی، نائجیریا، پاکستان، صومالیہ، جنوبی سوڈان، سیریا، ترکی، وینزویلا اور یمن کو شامل کیا گیا ہے.

2010 سے اب تک کانگو، صومالیہ اور یمن CSPA کی ہر لسٹ میں برقرار ہیں، دوسرے 9 مملک افغانستان، ایران، عراق، لیبیا، مالی، برما، نائجیریا، جنوبی سوڈان اور سوڈان پچھلے 10 سالوں سے اس فہرست میں ایک سے زیادہ دفعہ آئے ہیں، 2010کی پہلی CSPA کی لسٹ میں 6 مملک شامل تھے.10 سال بعد اس لسٹ میں دگنا اضافہ ہوا ہے، 2020 میں اس لسٹ میں 14 مملک شامل کئے گئے تھے،2021 میں اس لسٹ میں ممالک کی تعداد 15 ہوگئی ہے، اس سال کی لسٹ میں پاکستان اور ترکی کوبھی شامل کرلیا گیا ہے،