ورلڈ ہیڈر ایڈ

امریکی وزارت خارجہ نے ایران کو مزید تنہا کرنے کا عندیہ دے دیا

امریکی وزارت خارجہ کے ایک ذمے دار کا کہنا ہے کہ ایران کی جانب سے R&D سینٹری فیوجز کے حوالے سے کیے جانے والے اقدامات ،،، مذاکرات کی پوزیشن میں آنے اور عالمی برداری کو بلیک میل کرنے کی واضح کوشش ہے۔

ذمے دار نے ہفتے کے روز مزید کہا کہ "ہم یہ واضح کر چکے ہیں کہ اگر ایران نے اپنے جوہری پروگرام کے حوالے سے قابل تشویش اضافی اقدامات کیے تو ایرانی نظام کو سیاسی اور اقتصادی طور پر تنہا کرنے کا سلسلہ جاری رہے گا”۔

اس سے قبل اعلی سطح کے ایک ایرانی ذمے دار نے ہفتے کے روز ایک پریس کانفرنس میں باور کرایا تھا کہ ان کے ملک نے جمعے کے روز جوہری پروگرام کی پاسداریوں میں کمی کے حوالے سے ایک نئے اقدام کا آغاز کر دیا ہے۔

اسی طرح ایرانی ایٹمی توانائی کی ایجنسی کے ترجمان بہروز کمالوندی نے یورینیم کی افزودگی کی شرح بڑھانے کا عندیہ دیا۔ انہوں نے کہا کہ ایران 20% سے زیادہ کے تناسب سے یورینیم افزودہ کرنے کی صلاحیت رکھتا ہے۔

ترجمان کے مطابق ان کے ملک نے افزودہ یورنیم کے لیے جدید ترین سینٹری فیوجز کا استعمال شروع کر دیا ہے۔ انہوں نے بتایا کہ "A-4 نوعیت کے 20 سینٹری فیوجز کام کر رہے ہیں اور آئندہ دو ماہ کے دوران اسی ماڈل کے 164 سینٹری فیوجز کام کرنے کے لیے تیار ہوں گے”۔

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.