پاکستان مخالف اتحاد کی خاموش ٹھکائی ۔۔۔ محمد فہیم شاکر

مورخ کا کہنا ہے کہ ہمارے مغربی ہمسائے میں پاکستان مخالف اتحاد کی خاموش ٹھکائی بڑی شُدمُد سے جاری ہے اور اگر یہ منظر عام پر آئی تو دنیا میں تہلکہ مچ سکتا ہے۔
سادہ سی مثال ہے کہ جہاں کہیں پاکستان مخالف گٹھ جوڑ ہو رہا ہوتا ہے وہیں ایک “پلوامہ” ہوجاتا ہے۔
اور امریکہ رذیل باؤلا ہوکر عام آبادی پر بمباری کرتا اور دنیا میں حق پرستوں کو بلیک میل کرنے کی ناکام کوشش کرتا ہے۔
ذرا غور کیجیے کہ فروری 2019 میں جب انڈیا نے امریکی شہہ پر پاکستان پر جنگ مسلط کرنے کی کوشش کی تھی تو افغانستان میں امریکہ کی جو دُرگت بنی تھی وہ تو آپ کو یاد ہی ہوگی۔
پورا امریکی ائیربیس تباہ کر دیا گیا تھا درجنوں جنگی و ٹرانسپورٹ طیارے اور ٹینک اور 300 سے زائد امریکی سورمے نرک واصل ہوئے تھے یہ دراصل پاکستان کا جواب تھا۔
افغانستان میں را، سی آئی اے، موساد، این ڈی ایس پاکستان مخالف اتحاد کے روحِ رواں ہیں اور مزے کی بات کہ سب سے زیادہ ٹھکائی بھی انھی کی ہو رہی ہے اور ان میں سے بھی سب سے زیادہ چھترول اسرائیلی موساد کی ہو رہی ہے۔
اب گمنام مجاہدوں کے ہاتھوں ہونے والی چھترول کا بدلہ لینے کا بھوت اس بے چاری کے سر پر سوار ہے اور اس کوشش میں باقی سب بھی با جماعت چھتر کھا رہے ہیں اور ثواب کما رہے ہیں، لیکن کریں تو کیا کریں شور بھی نہیں کر سکتے، کہ جگ ہنسائی ہوگی اور تھو تھو الگ ہوگی کہ دنیا کی طاقتور ترین خفیہ ایجنسی دراصل چھترول کروا رہی ہے اور مفت کروا رہی ہے تو ایک ایسے چھوٹے سے ملک کی ایجنسی سے کہ جس کا بجٹ ہر لحاظ سے باقی ممالک سے کم ہے اور اس چھوٹے سے ملک کی ایجنسی اس کم ترین بجٹ میں بھی اپنی قوم کو بہترین سروسز فراہم کر رہی ہے۔

اب آپ کو سمجھ آئی کہ دراصل پاکستان کے اندر سے سیاہ ست دانوں اور مختلف سیاہ سی پارٹیوں کی جو فوج مخالف آوازیں بلند ہوتی ہیں وہ دراصل “پِیڑیں” کسی اور کی ہیں جو ان کے منہ سے نکل رہی ہیں۔
آئیے! ففتھ جنریشن وار میں مارخور کے ہمقدم ہوجائیے۔
آج جس جنگ میں ہم الجھ چکے ہیں یہ بلا شبہ سرحدوں پر نہیں لڑی جا رہی لیکن یہ عقائد و نظریات اور سوچوں میں لڑی جا رہی ہے۔
عقیدہ رہا تو ہم ہیں، عقیدے کی بنیاد پر وجود میں آنے والے دو ممالک کے درمیان اس وقت واضح طور پر ایک زبردست جنگ چھڑ چکی ہے جس میں ابھی تک مارخور دشمنوں کے قومی جانوروں کا بخوبی شکار کر رہا ہے۔
بس جوانو! آپ نے مارخور کی کمرِہمت بندھانی ہے اور اس کی پشت پر موجود رہنا ہے یعنی ففتھ جنریشن وار میں پیچھے نہیں ہٹنا، ہاں یاد رہے کہ آپ کو بہت سے ایسے محب وطن بھی ملیں گے جو وطن سے محبت کے نام پر افواج پاکستان اور دفاعی اداروں سے نفرت آپ کے دلوں میں بھرنے کی کوشش کریں گے لیکن آپ نے ان سے باخبر رہنا ہے اور بہت سے ایسے غدار بھی ملیں گے جو واشگاف الفاظ میں ملک اور فوج کو برا بھلا کہہ کر آپ کو پارہ چڑھانے کی کوشش کریں گے، ان سب سے آپ نے محتاط رہنا ہے۔
کیونکہ ہمیں اس وقت دنیا کی تمام بڑی طاقتوں سے زیادہ خطرہ اپنے اندر کے اُن غداروں سے ہے جو 24 گھنٹے اپنے اِن محسنوں کی کردار کُشی کرتے ہیں۔

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.