اے پی سی فلاپ شو، عوام کی توجہ کرکٹ میچ کی جانب رہی، صمصام بخاری

پنجاب کے وزیر اطلاعات سید صمصام علی بخاری نے کہا ہے کہ اے پی سی کا پہلا شو ہی فلاپ ہو گیا۔عوام کو اے پی سی سے کہیں زیادہ دلچسپی  پاکستان کے کرکٹ میچ سے رہی۔ بلاول بھٹو کا اے پی سی سے قبل از وقت چلے جانا معنی خیز ہے۔ مولانا کا استعفوں اور بائیکاٹ کا ایجنڈا کبھی کامیاب نہیں ہو سکتا۔اے پی سی نے استعفوں کی بجائے کمیٹی بنانے کا بہتر فیصلہ کیا۔

باغی ٹی وی کی رپورٹ کےمطابق صوبائی وزیر نے بدھ کو اے پی سی سے متعلق دیے گئے اپنے بیان میں کہاکہ اے پی سی میں نان ایشوز پر سیاست چمکانے کی کوشش کی گئی۔ مولانا کے سیاسی دسترخوان پر کرپشن پر سوچ بچار ہوئی۔ جبکہ اے پی سی کے شرکاء نے  ایک دوسرے سے دروغ گوئی کا مقابلہ کیا۔

صوبائی وزیر نے کہا کہ فنانس بل اور بجٹ کی کامیابی سے تمام افواہیں دم توڑ گئی ہیں۔ پنجاب اسمبلی میں بجٹ کی منظوری کے عمل کا شاندار آغاز خوش آئندہے۔ مطالبات زر کے بعد فنانس بل بھی بھاری اکثریت سے منظور ہوگا۔ صوبائی وزیر نے کہا کہ کہا تھا ناکہ یہ بازو آزمائے ہوئے ہیں۔پنجاب میں 43مطالبات زر منظور ہوئے مگراپوزیشن کچھ نہیں کر سکی۔پنجاب کی طرح وفا ق میں بھی بجٹ کی منظوری یقینی ہے۔ اپوزیشن نے اپنے مفادات کیلئے بجٹ کو ایشو بنانے کی ناکام کوشش کی۔

انہوں نے کہاکہ جمہوریت کے نام پر سازشیں کرنے والے کامیاب نہیں ہوں گے۔ اے پی سی جیسے ہتھکنڈے عمران خان کو دباؤ میں نہیں لا سکتے۔کوئی راستہ نہیں روک سکتا، نیا پاکستان بننے جا رہا ہے۔ صمصام بخاری نے کہا کہ گزشتہ روز شہباز شریف کی پیشی کہیں اور تھی اور وہ کہیں اور چلے گئے۔25 جولائی ہر محب وطن نے یوم تشکر کے طور پر منایا کیونکہ اس روز ہونے والے عام انتخابات میں دہائیوں سے باریاں لے کر ملکی خزانے سے کھلواڑ کرنے والی سیاسی جماعتوں کی بساط لپیٹ دی۔ الیکشن کے بعد ایک سال مکمل ہونے پر قوم چوروں اور لٹیروں سے نجات کا دن منارہی ہے۔ صوبائی وزیر نے کہا کہ نواز لیگ اور پیپلزپارٹی کا ایجنڈا مولانا سے قطعی مختلف ہے۔ وزیر اطلاعات پنجاب کا کہنا تھا کہ اے پی سی ناکام رہی ہے.

واضح رہے کہ اپوزیشن جماعتوں‌کی اے پی سی میں‌ کوئی بڑا فیصلہ نہیں‌ کیا جاسکا ہے جبکہ اسمبلیون سے استعفوں‌ پر پارٹیون میں‌اختلاف رہا.

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.