ورلڈ ہیڈر ایڈ

اے پی سی کا اعلامیہ اعتراف جرم ہے، شریک لیڈر ایک بیانیے پر متفق نہ ہو سکے، فردوس عاشق اعوان

وزیر اعظم پاکستان کی معاون خصوصی فردوس عاشق اعوان نے کہا ہے کہ حکومت کو گرانے کی خواہش رکھنےوالے ایک بیانے پر متفق نہ ہوسکے، اے پی سی میں کرپشن کے تدارک کے لیے کوئی بات نہیں کی گئی. پاکستان میں آئین اورقانون کی حکمرانی ہے.

باغی ٹی وی کی رپورٹ‌ کے مطابق انہوں‌نے کہاکہ دس ماہ کے بعد اپوزیشن کوایک دم سے الیکشن میں نقائص نظرآئے ہیں. اےپی سی والے اگلے 4 سال صبرکیساتھ پرانی تنخواہ پر کام کریں گے. مسلسل دس گھنٹے جاری رہنے والی اے پی سی ناکام ہوگئی. اپوزیشن کی منطق ہے جہاں وہ جیتی ہے وہاں شفاف انتخابات ہوئے،جہاں ہارے وہاں سلیکشن ہوئی. عمران خان کوپہلے ایوان نے سلیکٹ کیا پھرایلکٹ کیا.

فردوس عاشق اعوان نے کہاکہ سلیکٹڈ،ایلکٹڈ کے بعد تاحیات رجیکٹڈ کی بات بھی ہونی چاہیے،جسے سپریم کورٹ نے رجیکٹ کیا. فضل الرحمان کے اقتدارسے دوررہنے کے دکھ سے سب آگاہ تھے. ان لوگوں کے لیےگئے قرضوں پرموجودہ حکومت سود ادا کررہی ہے. اے پی سی کا اعلامیہ خود اپنی جگہ اعتراف جرم ہے. اپوزیشن نےاعلامیے میں اقبال جرم بھی کیا،یہ بجٹ منظورہوگا،اس کیساتھ اپوزیشن رہنماؤں کی دال روٹی بھی جڑی ہوئی ہے.

واضح رہےکہ آج اے پی سی میں تمام اپوزیشن جماعتوں نے شرکت کی. اس اے پی سی کا اعلامیہ جاری ہوئے اور مولانا فضل الرحمن کی پریس کانفرنس کے بعد فردوس عاشق اعوان کا یہ بیان سامنے آیا ہے.

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.