اراکین پارلیمنٹ کے ٹک ٹاک کے استعمال پر پابندی

اراکین پارلیمنٹ کے سوشل میڈیا ایپ ٹک ٹاک کے استعمال پر پابندی لگائی جائے، اسمبلی میں بھی مطالبہ آ گیا

باغی ٹی وی کی رپورٹ کے مطابق اسمبلی میں مطالبہ کیا گیا ہے کہ ٹک ٹاک پر پابندی لگائی جائے ،بھارت کی تیلگودیشم پارٹی کے رکن جے دیو گلا نے سوشل میڈیا ایپ ٹك ٹاك پر پابندی کا مطالبہ کرتے ہوئے بھارتی لوک سبھا میں بدھ کو کہا کہ اس کا استعمال غلط خبروں کے لئے ہوتا ہے. جے دیو گلا نے کا مزید کہنا تھا کہ بھارت میں ٹک ٹاک کے 30 کروڑ سبکرائبرز ہیں .

شوہر نے ٹک ٹاک استعمال کرنے سے روکا تو بیوی نے کی خودکشی

واضح رہے کہ رواں برس اپریل میں بھارت میں عدالتی حکم کے بعد ٹک ٹاک پر پابندی لگائی گئی اور یہ ایپلی کیشن ایپل اسٹور اور گوگل پلے اسٹورز سے بھی غائب ہوگئی تا اہم بھارت کے اراکین اسمبلی کے موبائل میں ٹک ٹاک موجود تھی .

ٹک ٹاک کو چین نے ستمبر 2016 میں لانچ کیا تھا۔ یہ ایپ اتنی تیزی سے مقبول ہوئی کہ محض 2 سال کے عرصے میں اسے اب تک 50 کروڑ سے زائد لوگ ڈاؤن لوڈ کر چکے ہیں جبکہ اس کا استعمال دنیا کے لگ بھگ 150 ممالک میں ہو رہا ہے۔

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.