fbpx

منشیات کیس میں گرفتار آریان کو جیل میں مشکلات کا سامنا، شاہ رخ بھی صحت کے مسائل سے دوچار

بالی ووڈ کنگ شاہ رخ خان کے بیٹے آریان خان منشیات کیس میں گرفتار ہیں جہاں وہ وائلٹ جانے سے بچنے کے لیے ٹھیک طرح سے کھانے پینے سے بھی گریز کررہے ہیں۔

باغی ٹی وی : بھارتی میڈیا رپورٹس کے مطابق آریان خان کو جیل میں کافی مشکلات کا سامنا ہے اور جیل قواعد کے مطابق انہیں نئے قرنطینہ سیل میں رکھا گیا ہے لیکن وہ اس مشکل وقت میں جیل کے ٹوائلٹ استعمال کرنے سے کترارہے ہیں بھارتی میڈیا کے مطابق انہیں صبح 6 بجے اٹھا کر 7 بجے ناشتہ دیا جاتا ہے جب کہ دوپہر کا کھانا 11 بجے دیا جاتا ہے جس میں دال چاول شامل ہیں-

بھارتی میڈیا کا کہنا ہےکہ آریان جیل میں ٹوائلٹ جانے کے خوف سے نہ کچھ کھارہے ہیں اور نہ پی رہے ہیں، جیل حکام اور انتظامیہ اس حوالے سے خاصے فکر مند ہیں اور انہیں عملے کی جانب سےباقاعدگی سے کھانے اور پینے کے حوالے سے کہا جارہا ہے۔

تاہم بھارتی میڈیا کے مطابق آریان خان فی الحال بسکٹس کھانے کے طور پر کھا رہے ہیں رپورٹ میں دعویٰ کیا گیا ہےکہ آریان نے بسکٹس کے کچھ پیکٹس آرتھر روڈ جیل کی کینٹین سے خریدے ہیں اور وہ بظاہر غم و غصے کی کیفیت سے دوچار ہیں اسی لیے گزشتہ کچھ روز سے وہ کھانا ٹھیک سے نہیں کھا رہے۔

دوسری جانب آریان کے ہمراہ گرفتار ان کے دوست ارباز مرچنٹ اور دیگر افراد نے بھی جیل کا کھانا کھانے سے انکار کردیا اور وہ کینٹین سے لے کر کھانا کھا رہے ہیں جس کیلئے پیسوں کی ادائیگی بھی وہ خود کررہے ہیں۔

ادھر بھارتی میڈیا کا بتانا ہےکہ شاہ رخ خان بھی آریان خان کی صحت کے حوالے سے خاصے پریشان ہیں، دن بھر میں شاہ رخ کی جانب سے انتظامیہ کو آریان کی صحت جاننے کے لیے کئی فون کیے جاتے ہیں جبکہ شاہ رخ بیٹے کی گرفتاری کےبعد سے خود بھی صحت کے مسائل سے دوچار ہیں۔

بھارتی میڈیا کی رپورٹ کے مطابق آریان کی گرفتاری نے اداکار کو مبینہ طور پر بے حد متاثر کیا ہے جبکہ موجودہ دور ان کی زندگی کا مشکل ترین وقت ہے۔

شاہ رخ کے قریبی دوست نے اس بات کا انکشاف کیا ہے کہ سپر اسٹار خود کو بہت پرسکون اور مطمئن ظاہر کررہے ہیں لیکن درحقیقت وہ غم و غصے کی کیفیت سے دوچار ہیں جب سے آریان منشیات کے کیس میں گرفتار ہوئے ہیں تب سے شاہ رخ ٹھیک طرح سے سو نہیں پائے، نہ ہی وہ صحیح سے کھانا کھا رہے ہیں، بیٹے کی گرفتاری نے انہیں بالکل توڑ کر رکھ دیا ہے۔

جبکہ آریان خان کی منشیات کیس میں گرفتاری نے بالی وڈ کنگ سمیت ان کے اہل خانہ کو مشکلات میں ڈال دیا ہے بھارتی میڈیا رپورٹس میں دعویٰ کیا گیا ہے کہ آریان کی گرفتاری نے شاہ رخ خان کی پیشہ ورانہ زندگی کو بھی متاثر کیا ہے اداکار نے اپنی آنے والی فلم ‘پٹھان’ کی بین الاقوامی شوٹنگ کا شیڈول بھی منسوخ کردیا ہے اور ہدایت کار ایٹلی کی فلم کی شوٹنگ بھی ملتوی کردی گئی ہے ایک ایجوکیشن برانڈ نے بھی شاہ رخ خان کے اشتہارات کو عارضی طور پر روک دیا ہے۔

دوسری جانب سہانا خان بھی بھائی کی گرفتاری سے سخت پریشان ہیں تعلیم کے سلسلے میں بیرون ملک مقیم سہانا ہر گھنٹے بھارت فون کرکے اپنی والدہ گوری خان سے آریان اور شاہ رخ کی صحت سے متعلق پوچھتی ہیں اور وہ موجودہ صورتحال کے سبب کافی زیادہ پریشان ہیں۔

رپورٹس کے مطابق جب آریان کے منشیات لینے کی خبر جنگل کی آگ کی طرح پھیلی تو سہانا نے فوری طور پر اپنی والدہ کو فون کیا اور ان سے وطن واپس لوٹنے کی اجازت طلب کی جس پر گوری نے سخت لہجے میں سہانا کو وہیں رکنے کا حکم دیا گوری خان نہیں چاہتیں کہ آریان کی وجہ سے سہانا یا ان کے چھوٹے بیٹے ابرام کی روٹین میں کوئی خلل آئے۔

شاہ رخ بیٹے کی رہائی کے لئے کوششوں میں مصروف ہیں اس ضمن میں انہوں نے ملک کے بڑے اور ماہر قانون دانوں سے رابطے کئے ہیں انہوں نے بیٹے آریان کے لیے سلمان خان کو ہٹ اینڈ رن کیس میں بری کروانے والے وکیل امیت دیسائی کو ہائر کیا ہے۔

بھارتی میڈیا رپورٹس کے مطابق شاہ رخ خان نے امیت دیسائی کے توسط سے آریان کی ضمانت کی درخواست دائر کی ہے جب کہ اس سے قبل ستیش مان شیندے نامی وکیل ضمانت کے کیس کی پیروی کررہے تھے۔

حال ہی میں ہوئی سماعت کے دوران نارکوٹکس کنٹرول بیور و (این سی بی) کے وکیل نے عدالت میں مؤقف اپنایا تھا کہ این سی بی کو جواب جمع کروانے کے لیے کم از کم ایک ہفتے کا مزید وقت دیا جائے کیوں کہ منشیات کیس کی کئی ضمانتیں زیر التوا ہیں۔

این سی بی کے وکیل کے بیان پر جرح کرتے ہوئے امیت دیسائی کا کہنا تھا کہ آریان خان ایک ہفتے سے جیل میں ہیں، درخواست ضمانت کی سماعت کے لیے تحقیقات پر انحصار کرنے کی ضرورت نہیں ہے، میرا مؤقف ضمانت پر بحث کرنا نہیں بلکہ تاریخ پر بحث کرنا ہے۔

امیت دیسائی کا کہنا تھا کہ این سی بی کی انتظامی وجوہات کی بناء پر کسی کی آزادی کو روکا نہیں جاسکتا، ان کی تفتیش جاری رہ سکتی ہے اور جہاں تک آریان کا تعلق ہے تو ان کی سزا زیادہ سے زیادہ ایک سال ہوسکتی ہے۔

دوسری جانب منشیات کیس میں گرفتار آریان خان کے ہمراہ گرفتار ہونے والے ان کے قریبی دوست ارباز مرچنٹ اور منمون دھمیچا کے وکیل طارق سید نے بھارتی میڈیا سے گفتگو میں کیس سے متعلق اہم پہلوؤں پر اپنے خیالات کا اظہار کیا تھا اور نارکوٹکس کنٹرول بیورو کی جانب سےکیس کو بلاوجہ طول دیے جانے پر سوالات اٹھائے۔

طارق سید نے کہا تھا کہ پولیس کے مطابق ارباز مرچنٹ کے جوتوں سے 5 گرام چرس برآمد ہوئی ہے تو پھر انہیں تحویل میں لینے کی کیا ضرورت تھی جب اتنی کم مقدار میں چرس برآمد ہوئی؟ ارباز نے اس بات کا اعتراف بھی کرلیا تھا کہ وہ یہ 5 گرام چرس جہاز پر پینے جارہا تھا، پھر اس سیدھے اور واضح معاملے کی مزید تفتیش کرنے کی کیا ضرورت ہے؟

وکیل سے سوال کیا گیا کہ کیا یہ الزام سچ ہے کہ این سی بی حکام کو ان کے کلائنٹ کے پاس سے منشیات برآمد ہوئی؟ اس پر وکیل نے جواب دیا کہ یہ این سی بی کی جانب سے کہا گیا ہے، میرے پاس اس کا کوئی ریکارڈ موجود نہیں ہے۔

طارق سید کا کہنا تھا کہ 5 گرام چرس جو انہیں مبینہ طور پر ملی ہے ، کیا وہ لڑکے جہاز پر اسے بیچنے جائیں گے؟ جیسا کہ میں نے پہلے کہا تھا، وہ جہاز پر 5 گرام چرس بیچنے کیوں جائیں گے جب وہ پورا جہاز خرید سکتے ہیں؟

Facebook Notice for EU! You need to login to view and post FB Comments!