fbpx

اسد طور کو مارنے والے پکڑے گئے، شرمندگی کس کامقدر بننے والی ؟ سنئے مبشر لقمان کی زبانی

اسد طور کو مارنے والے پکڑے گئے، شرمندگی کس کامقدر بننے والی ؟ سنئے مبشر لقمان کی زبانی

باغی ٹی وی :سینئر اینکر پرسن مبشر لقمان نے کہا ہے کہ یہ بالکل بکواس ہے کہ اور ایسا کچھ بھی نہیں ہوتا کہ بولنے کی آزادی ہو. ہر جگہ کوئی نہ کوئی ایک سرخ لائن ہوتی ہے . اور کسی بھی ملک کے ادارے یا ریاستی عوامل ایک حد تک برداشت کرتے ہیں .

جو اس بات کے چیمپئن ہیں‌ وہاں بھی ایک حد تک آزادی اظہار ہوتا ہے سرخ لکیر وہاں بھی کراس نہیں کی جاسکتی .
اب جو اس بات پر ایکشن ہوا ہے . یا ایف آئی آر درج ہوئی ہے وہ کوئی گوجرانوالہ کا صحافی ہے . اس معاملے میں وفاقی حکومت کہاں ہے . فواد چودھری کیوں چپ ہے ، عمران کیوں خاموش ہیں . شیخ رشید کہاں ہیں .

حکومت نے ایک قانون تو پاس کر رکھا ہے کہ جوبھی فوج پر ایسی بات کرے گا. اس پر آپ پر پرچہ ہوگا . لیکن اس سارے معاملے میں حکومت کیوں‌خاموش ہے اور حکومت سب کی لڑائیاں کرا رہی ہے . خودکہاں ہے . اس کی نااہلی ہے کہ وہ خاموش ہے . .

مبشر لقمان کا کہنا تھا کہ اب فریڈم آف سپیچ کے نام پر کوئی والدین سے پوچھنا شروع کردے تو پھر کیا ہوگا. مجھے پتہ ہے کہ میں کیسے پیدا ہوا ہوں ، کیا میں اپنے والدین سے تحقیق کرتا پھروں‌گا ایسا نہیں ہوتا ہر اک کی کوئی نہ کوئی حد ہوتی ہے اس سے تجاوز کیا جائے گا تو نظام درھم برہم ہوجاتا ہے .

انہوں نے کہا کہ اگر آپ نے الزام لگا دیا ہے تو پھر آپ یہ کہہ کر بچ نہیں سکتے کہ میں نے نام نہیں لیا ، عدالت آپ کو مجبور کرے گی کہ اتنی بڑی تہمت لگائی ہے تو اب نام بھی لو . سب کو اس طرح دفاعی پوزیشن پر لا کر کھڑا کر دینا یہ ٹھیک بات نہیں‌ ہے .

انہوں نے کہا کہ میں آپ کو بریکنگ نیوز دے رہا ہو‌ں‌اور یہ چڑیل نے مجھے خبر دی ہے کہ اسد طور کے حملہ آور پکڑے گئے ہیں اور وہ تینوں‌ آدمی ہراست میں ہیں ان سے ڈی این اے ٹیسٹ وغیرہ لیے جارہے ہیں . کل تک پوری تحقیق قوم تک پہنچ جائے گی .

مبشر لقمان کا کہنا تھا کہ جب تحقیقی رپورٹ سامنے آئے گی تو ان سب صحافتی تنظیموں کو شرمندگی کا سامنا کرنا پڑے گا کہ ہم نے کس لیے سب کچھ کیا .اور جب حقیقت سامنے آئی کہ سارا معاملہ تھا ہی کچھ اور تو پھر سب کو مشکل ہوگی اسی لیے اتنی جلدی رد عمل نہیں‌ دینا چاہیے .