fbpx

آشا بھوسلے کو کس گلوکار کے ساتھ گانا پسند تھا؟

آشا بھوسلے سے ایک انٹرویو ہوا اس میں ان سے پوچھا گیا کہ انہوں نے ابھی تک جتنے بھی گلوکاروں‌ کے ساتھ گایا ہے کس کے ساتھ گا کر انہیں بہت مزا آیا . تو آشا بھوسلے نے کہا کہ مجھے کشور کمار کے ساتھ گانے کا بہت مزا آتا تھا وہ ایسے گلوکار تھے جو اپنی طرف سے گانے میں حرکتیں شامل کر لیتے تھے ان کے ساتھ میرے سب سے زیادہ گیت ہوئے. ان کے ساتھ گا کر اس لئے بھی مزا آتا کیونکہ وہ ہر وقت ہنستاتے رہتے تھے گانے کے دوران خود سے آلاپ شامل کر لیتے تھے اور باقی وقت ہنستاتے رہتے تھے . انہوں نے یہ بھی کہا کہ وہ ایسی حرکتیں کرتے تھے کہ جس سے لوگوں‌ کو لگتا تھا کہ وہ بے وقوف ہیں لیکن ایسا نہیں‌تھا وہ بہت ہوشیار تھے. آشا بھوسلے نے کہا

کہ کلاسیکل گانے کا مزا منا دے کے ساتھ آتا تھا ان کی تو آواز ایسی تھی کہ جس کو سن کر دل کرتا تھا کہ بس سنتے ہی جائیں رکیں نا. انہوں‌نے مزید کہا کہ ہیمنت کمار جیسی آواز نہ کبھی میں نے آج تک سنی ہے نہ ہی پیدا ہو گی ، ان کے جیسا سر کوئی نہیں لگ سکتا تھا بھگوان نے ان کو جو گلہ اورسر دیا تھا وہ کم کم گلوکاروں کے حصے میں آتا ہے. محمد رفیع کے لئے لیکن انہوں نے کہا کہ رفیع بہت اچھے گلوکار تھے اچھے انسان تھے لیکن ان کو میوزک ڈائریکٹر جیسا سکھاتے تھے بس وہ ویسا ہی گاتے تھے خود سے گانے میں کچھ شامل کرنے کی کوشش نہیں‌کرتے تھے. مجھے ایسا لگتا تھا کہ وہ اس سے زیادہ گا سکتے ہیں اور بہتر گا سکتے ہیں لیکن وہ دھیان نہیں‌دیتے تھے بس جو سکھایا گا کر چلے جاتے تھے. بہت ہی شانت طبیعت کے مالک تھے.