سرگودھا:شہری سے 45 لاکھ تاوان وصولی، اے ایس آئی کیخلاف مقدمہ درج ، نوکری سے برطرف

سرگودھا ،باغی ٹی وی( ادریس نواز چدھڑ سے ) شہری کو جھوٹے الزام میں گرفتار کر کے 45 لاکھ روپے تاوان وصول کرنے کا معاملہ ۔ اے ایس آئی کیخلاف مقدمہ درج کر کے نوکری سے برخاست کر دیا گیا ۔ سابقہ اے ایس آئی کے پولیس افسران پر جھوٹے و من گھڑت الزامات کا سلسلہ جاری

تفصیلات کے مطابق سرگودھا میں اختیارات کے غلط استعمال اور شہری سے تاوان لینے پر اے ایس آئی کو نوکری سے برخاست کر دیا گیا ۔ ترجمان سرگودھا پولیس کے مطابق سابقہ اے ایس آئی رشید گجر نے ایک شہری کو خود ساختہ الزام میں حوالات میں بند کیا جس سے 45 لاکھ روپے تاوان وصول کیئے، شہری کی درخواست پر اس معاملہ کی انکوائری کروائی گئی ۔

انکوائری رپورٹ میں رشید گجر کے خلاف 45 لاکھ روپے تاوان لینا ثابت ہوا جس بنا پر اس کے خلاف تھانہ سیٹلائٹ ٹاؤن سرگودھا میں مقدمہ درج کیا گیا ۔ اور محکمانہ کارروائی کے نتیجے میں اس کو نوکری سے برخاست کر دیا گیا ۔

اس رنجش پر اس نے سرگودھا پولیس کے افسران پر بے بنیاد الزامات لگائے ہیں جن میں کوئی صداقت نہیں ، اس کے علاوہ سابقہ اے ایس آئی کو 2012 , 2013 ، 2014 ، 2017 اور 2020 میں بھی کرپشن کی شکایات موصول ہونے پر متعدد بار پولیس ڈیپارٹمنٹ اور اینٹی کرپشن میں بھی محکمانہ و قانونی سزا ہو چکی ہے ۔

اے ایس آئی رشید گجر کی جو وڈیوز وائرل ہوئی ہیں ان میں صاف دیکھا جا سکتا ہے کہ وہ کس طرح شہریوں سے تھانہ میں بیٹھ کر رشوت وصول کر رہا ہے۔ اور اپنی کرپشن و دیگر الزامات کو چھپانے کیلئے سرگودھا پولیس کے افسران پر من گھڑت اور جھوٹے الزامات لگا رہا ہے ۔ جبکہ ڈی پی او سرگودھا محمد فیصل کامران اور ایس پی انویسٹی گیشن فرحان اسلم کی تعیناتی کے بعد جرائم پیشہ افراد ، رسہ گیر اور ٹاؤٹ مافیا کا خاتمہ ہوا ۔ سائلین کو بنا کسی سفارش و رشوت کے فوری اور میرٹ پر انصاف کی فراہمی ، تھانہ کلچر میں تبدیلی اور پولیس میں چھپی کالی بھیڑوں کا بھی محاسبہ ہوا ۔

جس کی مثال اس سے پہلے کم ہی ملتی ہے ۔ ڈی پی او سرگودھا تھانہ کلچر میں سیاسی مداخلت کو بھی برداشت نہیں کرتے ، یہ واحد ڈی پی او ہیں ۔ جو اس قدر بہادر ، دلیر اور فرض شناس ہیں کہ بنا کسی سفارش و دباؤ کے سائلین کو انصاف کی فراہمی میں اہم کردار ادا کر رہے ہیں ۔ اسی وجہ سے آج سرگودھا کے شہری کسی اور کے پاس سفارش کیلیئے نہیں جاتے کیونکہ انہیں معلوم ہو چکا ہے کہ اب بنا کسی سفارش کے بھی ڈی پی او سرگودھا انصاف فراہم کر رہے ہیں اور یہی بات کچھ مفاد پرست لوگوں کی برداشت سے باہر ہو چکی ہے ۔

شہریوں نے آئی جی پنجاب سے مطالبہ کیا ہے کہ ڈی پی او سرگودھا اور ایس پی انویسٹی گیشن فرحان اسلم جیسے محنتی ، بہادر اور فرض شناس افسران کی مکمل حمایت کی جائے تاکہ جھوٹے پروپیگنڈے کرنیوالوں کے منہ بند ہو سکیں ۔

Leave a reply