اجتماعی استعفوں کی تجویز پرخاموشی ،اے پی سی میں کیا طے ہو گا؟ اہم خبر

اپوزیشن جماعتوں کی کل جماعتی کانفرنس میں مولانا فضل الرحمان کے اجتماعی استعفوں کی تجویز پر مکمل خاموشی ہے،. عوامی نیشنل پارٹی نے چیئرمین سینیٹ کی تبدیلی کی تجویز دے گی

بلاول پہنچے اے ہی سی میں، مولانا نے اجتماعی استعفوں کی تجویز دے دی

باغی ٹی وی کی رپورٹ کے مطابق اسلام آبا دکے مقامی ہوٹل مٰیں اپوزیشن جماعتوں کی اے پی سی مولانا فضل الرحمان کی زیر صدارت جاری ہے، مسلم لیگ ن کا وفد شہباز شریف اور مریم نواز کی قیادت میں شریک ہوا ہے،.پیپلز پارٹی کے چیئرمین بلاول زرداری،سمیت دیگر اپوزیشن جماعتوں کے رہنما بھی اے پی سی میں شریک ہیں.

غیرمنتخب نمائندے کی سربراہی میں ہونیوالی اے پی سی میں غیر منتخب نمائندوں کی بھرمار

اے پی سی کا آغاز،بلاول پہنچے عدالت، مریم نواز کو کہاں بٹھایا گیا؟ اہم خبر

اے پی سی کا باقاعدہ آغاز تلاوت قرآن مجید سے ہوا، اجلاس کے تمہیدی کلمات میں مولانا فضل الرحمان نے تمام اپوزیشن جماعتوں کو اجتماعی استعفیٰ کی تجویز دی جس پر دیگر تمام جماعتیں ابھی تک خاموش ہیں، کسی بھی جماعت نے استعفوں کی تجویز پر فوری ردعمل نہیں دیا.

اے پی سی سے قبل اپوزیشن جماعتوں کی پارلیمانی پارٹیوں کا اجلاس

اپوزیشن کی اے پی سی شروع ہونے سے قبل ہی ناکام ،اہم خبر

دوسری جانب عوامی نیشنل پارٹی کے صدراسفند یارولی نےچیئرمین اورڈپٹی چیئرمین سینیٹ کی فوری تبدیلی کی تجویز دے دی

اپوزیشن کی اے پی سی ہو گی ان کیمرہ، میڈیا بریفنگ ہو گی آخر میں

 

اے پی سی سے خطاب کرتے ہوئے مولانا فضل الرحمان کا کہنا تھا کہ ملک میں مہنگائی عروج پر پہنچ گئی ،عوامی مشکلات اورحکومت کے خاتمے کےلیے مل کرآگے بڑھنا ہوگا ،مولانا فضل الرحمان کا مزید کہنا تھا کہ حکومت کو گھربھیجنے کے لیے سڑکوں پربھی آنا پڑے تونکلنا چاہیے، دھاندلی سے بات شروع کی تھی معاملہ اب عوام کی داد رسی کا ہے .

حکومتی اتحادی جماعت بی این پی اے پی سی میں شرکت کریگی یا نہیں، فیصلہ ہو گیا

اے پی سی کو کامیاب بنانے کیلیے مولانا متحرک، نیشنل پارٹی کے وفد سے ملاقات

مریم نواز کا ایک اور یوٹرن، مولانا فضل الرحمان کا رابطہ، مریم نواز نے کیا کہا؟

قومی اسمبلی مٰیں قائد حزب اختلاف شہباز شریف نے اے پی سی سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ تمام اپوزیشن کی جماعتیں مل کرکسی لائحہ عمل پرمتفق ہوں حکومت چوری کے ووٹوں سے بنی عوام کی تکالیف کی ترجمانی نہ کی تو بہت برا ہوگا ،شہباز شریف کا مزید کہنا تھا کہ حکومت کو گھر بھیجنےکے لیے ہر حربہ اختیارکرنا چاہیے ،

آل پارٹیز کانفرنس میں اپوزیشن جماعتوں کے تمام سربراہان پر مشتمل رہبر کمیٹی تشکیل دیے جانے کا امکان ہے جس کی تجویز شہباز شریف نے دی ہے. رہبر کمیٹی نیشنل چارٹر اور میثاق معیشت کا خاکہ تیار کرے گی۔ رہبر کمیٹی آئندہ کا سیاسی لائحہ عمل اور اہداف کا تعین بھی کرے گی۔ اپوزیشن جماعتوں کے رہنمائوں پر مشتمل رہبر کمیٹی پاکستان کو درپیش داخلی و خارجی خطرات پر بھی قومی ایجنڈا تیار کرے گی۔

مولانا فضل الرحمان نے اسمبلی سے استعفوں کی تجویز دی ہے وہ پاکستان میں نئے الیکشن کا مطالبہ کریں گے لیکن مسلم لیگ ن اور پیپلز پارٹی ایوان میں رہنے کی کوشش کریں گی. اور استعفوں اور نئے الیکشن کی بات نہیں مانیں گی

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.