fbpx

عورت مارچ کیخلاف درخواست پر اسلام آباد ہائیکورٹ میں کب ہو گی سماعت؟

عورت مارچ کیخلاف درخواست پر اسلام آباد ہائیکورٹ میں کب ہو گی سماعت؟

باغی ٹی وی کی رپورٹ کے مطابق عورت مارچ آرگنائزر  کے خلاف کارروائی کیلئے دائر درخواست پر ہائیکورٹ کا نیا بینچ تشکیل دے دیا گیا

اسلام آباد ہائیکورٹ کے رجسٹرار آفس نے کیس 26 اپریل کو سماعت کیلئے مقرر کردیا جسٹس عامر فاروق عورت مارچ کے آرگنائزرز کے خلاف درخواست پرسماعت کریں گے جسٹس میاں گل حسن اورنگزیب نے نئے بینچ کی تشکیل کیلئے فائل چیف جسٹس کو بھجوائی تھی شہداء فاؤنڈیشن کی جانب سے طارق اسد ایڈووکیٹ نے درخواست دائرکررکھی ہے درخواست میں پیمرا، چیف سیکرٹریز اور قانون نافذ کرنے والے اداروں کوفریق بنایا گیا ہے۔ درخواست میں عدالت سے استدعا کی گئی ہے کہ عورت مارچ کی پرنٹ اور الیکٹرانک میڈیا کوریج پر پابندی عائد کی جائے اور عدالت عورت مارچ انتظامیہ کے خلاف کاروائی کرنے کا حکم دے عورت مارچ اور ویلنٹائنز ڈے جیسے دیگرایونٹس پر پابندی کے احکامات جاری کیے جائیں،کیا پاکستان میں خواتین کو قانونی حقوق حاصل نہیں؟غور کے لیے معاملہ اسلامی نظریاتی کونسل کو بھجوایا جائے،غیر ملکی این جی اوز اور پاکستانی این جی اوز کی غیر ملکی فنڈنگ کا ریکارڈ طلب کیا جائے،

عظمیٰ خان کی پریس کانفرس چینلز نے کیوں نہ ‌دکھائی، طاقتور لوگ اثر انداز ہوگئے.

عظمیٰ سسٹرز تشدد کیس میں ملک ریاض کی بیٹی ملوث، ثبوت سامنے آ گئے

ملک ریاض کی فیملی کے تشدد و دھمکیوں کی ایک اور ویڈیو منظر عام پر

عظمیٰ تشدد کیس، پولیس مجرموں کو گرفتار کرے، سزا ملے تا کہ عبرت کا نشان بنیں، اعجاز چودھری

‏شادی شدہ کامیاب مرد سے پیسے کی خاطر جسمانی تعلق رکھنا عورت کی تذلیل ہے۔ فرح سعدیہ

‏خواتین کو جب اعتکاف کی مبارکباد دینے جائیں تو صرف مٹھائی لے کر جائیں. شفاعت علی

قبل ازیں لاہور کی ایک عدالت نے عورت مارچ کے منتظمین کے خلاف جلد مقدمہ درج کرنے کا حکم دے دیا ہے ،ذرائع کے مطابق لاہور کی ایک عدالت نے حکم جاری کرتے ہوئے کہا کہ 8 مارچ کو پاکستان میں جس طرح عورت مارچ کی آڑ میں ملک میں انتہائی گھٹیا،قومی اوراسلامی اقدارکےخلاف جو گھناونا کھیل کھیلا گیا اس کے خلاف مقدمہ درج کرکے عدالت کورپورٹ جمع کروائی جائے چند دن پہلے عدالت سے رجوع کرتے ہوئے محمد عمیر جہانگیرنے ایف آئی اے کو درخواست میں ا ستدعا کی ہے کہ عورت مارچ کی آڑ میں پاکستانی ،قومی اوراسلامی اقدار کے خلاف زبان درازیاں‌کی گئی ہیں‌ اس درخواست میں کہا گیا ہے کہ ایسے غلیظ اور اسلامی معاشرتی اقدار کے خلاف نعرے بازی کی گئی ہے کہ جس نے ہمارے ایمان کو بھی پارہ پارہ کردیا ہے اوریہ بھی درخواست کی گئی ہے کہ ان بدزبان اورشریعت محمدی کے خلاف زہراگلنے والوں کے خلاف درج کیا جائے جس پر عدالت نے فیصلہ دے دیا ہے

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.