fbpx

بحیرہ جنوبی چین میں آسٹریلوی فوجی طیارہ خود مختاری کےلیےخطرہ ہے:چین

بیجنگ :چین کی حکومت نے بحیرہ جنوبی چین میں آسٹریلوی فوجی طیارے کی موجودگی کو اپنی خود مختاری کے لیے خطرہ قرار دے دیا۔چین کی وزارت دفاع نے کہا ہے کہ اس کی فوج نے ایک آسٹریلوی فوجی طیارے کی بحیرہ جنوبی چین میں شناخت کرنے کے بعد اسے وہاں سے نکل جانے کی تنبیہ کی ہے۔

بحیرہ جنوبی چین میں چین اورامریکی بحریں مشقیں‌:کیا نئی جنگ کاآغازہے:امریکہ

چینی وزارت دفاع کے ترجمان تان کیفی نے آج بروز منگل بتایا کہ آسٹریلوی فوجی طیارے سے چین کی خود مختاری اور سلامتی کو شدید خطرات لاحق ہوئے ہیں اور چین کی فضائیہ کے جے 16 طیارے کی جانب سے کیے گئے جوابی اقدامات مناسب اور قانونی ہیں۔

بحیرہ جنوبی چین کے معاملے پر چین کی بھرپورحمایت کرتے ہیں‌ : پاکستان کا دبنگ اعلان

یہ بھی معلوم ہوا ہے کہ اس علاقے میں بھارت ، آسٹریلیا،جاپان اور امریکہ کے اتحاد پر مشتمل کواڈ ممالک نے مشترکہ بحری مانیٹرنگ کررکھی ہے جس کا مقصد چین کے بحری جہازوں کی نقل وحرکت پر نظررکھنا ہے ، یہ بھی بتایا جارہا ہےکہ آنے والے دنوں میں یہ اتحاد چین کے خلاف مزید ناکہ بندی کی کوشش کررہا ہےاور چین کے بڑھتے ہوئے اثرورسوخ کوکم کرنے کی کوشش بھی کررہا ہے

چین کے خلاف امریکہ اورجاپان کا اکٹھ:چین نے سخت جواب دے دیا

یاد رہے کہ اس سے قبل اتوار کے روز آسٹریلیا کے محکمہ دفاع نے کہا تھا کہ 26 مئی کو چین کے ایک لڑاکا جے 16 طیارے نے خطرناک طرز عمل اپناتے ہوئے بحیرہ جنوبی چین میں اس کے ایک فوجی نگرانی والے طیارے پی 8 اے پوزائیڈن کو روکا تھا جو اپنے معمول کے نگرانی مشن پر تھا۔ چینی لڑاکا طیارے کے اس اقدام سے اُس کے جہاز اور اس میں سوارعملے کی زندگیاں خطرے سے دوچار ہو گئی تھیں۔