fbpx

مفروضوں اورذرائع سے حاصل ہونے والی خبروں کوشائع کرنے سے اجتناب کیا جائے:پیمرا

اسلام آباد:مفروضوں اورذرائع سے حاصل ہونے والی خبروں کوشائع کرنے سے اجتناب کیا جائے:اطلاعات کے مطابق پیمرا نے پرنٹ ، الیکٹرانک اورسوشل میڈیا پلیٹ فارمز سے کچھ گزارشات کی ہیں

پیمرا کی طرف سے جاری نوٹیفکیشن میں کہا گیا ہےکہ وفاقی کابینہ اورکابینہ کے اجلاس کی خبراگرسرکاری ذرائع سے ملے توٹھیک ہے ، اس کے علاوہ کوئی نشریاتی ادارہ مفروضوں اورذرائع کا حوالہ دیکرخبرشائع نہ کرے اس سے بہت سی قباحتیں‌پیدا ہوتی ہیں

پیمرا کی طرف سے تمام شریاتی اداروں کوہدایت کی گئی ہےکہ وہ اس معاملے پرتعاون کریں اوربے جا خبروں کی تصدیق کے بغیرکسی قسم کی کوئی خبرجاری نہ کریں

 

دوسری طرف پاکستان الیکٹرانک میڈیا ریگولیٹری اتھارٹی (پیمرا) کی جانب سے ’ایڈوائس‘ کے نام پر وفاقی کابینہ کی کارروائی کی ٹی وی چینلز پر ’ذرائع‘ سے خبریں نشر کرنے پر حالیہ ممانعت پر ایسوسی ایشن آف الیکٹرانک میڈیا ایڈیٹرز اینڈ نیوز ایڈیٹرز (ایمینڈ) نے سخت اعتراض کیا ہے۔

ایمینڈ کی جانب سے جاری بیان میں کہا گیا ہے کہ ایسوسی ایشن کا یہ واضح مؤقف ہے کہ اگر وفاقی کابینہ کی کارروائی یا وہاں لیے جانے والے فیصلوں سے متعلق کوئی خبر موجود ہے اور سرکاری سطح پر اس معاملے پر اعلیٰ عہدے دار تصدیق کرنے سے گریز کریں تو یہ میڈیا کی ذمہ داری ہے کہ وہ عوامی مفاد میں اس خبر کو رپورٹ کرے۔

ایمینڈ کا مزید کہنا ہے کہ بعض اوقات سینیئر حکومتی عہدے دار ہی کابینہ کی کارروائی کی معلومات فراہم کرتے ہیں لیکن ساتھ ہی نام ظاہر نہ کرنے کی درخواست بھی کرتے ہیں۔

ایمینڈ کا کہنا ہے کہ خبر نشر ہونے کے بعد وفاقی حکومت یہ حق رکھتی ہے کہ وہ اس سے اختلاف کرے یا اس کی وضاحت جاری کرے۔

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.