عوام کی زندگیوں سے کھلواڑ ہوگیا

ضلع بھر میں نجی لیبارٹریز نے عوام کی زندگیوں سے کھلواڑ شروع کر دیا ہے۔
باغی ٹی وی کی رپورٹ کے مطابق قصور کے چھوٹے بڑے قصبوں اور شہری علاقوں میں قائم نجی لیبارٹریز بغیر ٹیسٹ کیے جعلی رپورٹس تیار کر کے دے رہے ہیں۔ محکمہ صحت سمیت دیگر ادارے خامو ش تماشائی بنے ہوئے ہیں۔ تفصیلات کے مطابق قصور شہر سمیت ضلع کے دیگر شہروں مصطفی آباد،کھڈیاں،الہ آباد،چونیاں،ٹھینگ موڑ،چھانگا مانگا،بھائی پھیرو ،کوٹرادھاکشن ،پتوکی سمیت دیگر علاقوں میں بغیر لائسنس اور جعلی رپورٹس دینے والی مہنگی پرائیویٹ لیبارٹریوں کی بھرمار ہوچکی ہے شہریوں کے مطابق 80فیصد ڈاکٹرزایسے ہیں جو کمیشن دینے والی لیبارٹریوں سے مریضوں کو ٹیسٹ کروانے کی تجویز کرتے ہیں اگر کوئی شہری کسی اور لیبارٹری سے اپنے ٹیسٹ کروا لے تو وہ کسی اور لیبارٹری کی رپورٹ ماننے سے انکار کردیتے ہیں اور کہتے ہیں اس لیبارٹری کی رپورٹ درست نہیں ہوتی لہذا ہم نے جس لیبارٹری سے ٹیسٹ کروانے کا کہا ہے اسی لیبارٹری سے ٹیسٹ کروا کر آئیں۔ شہریوں نے میڈیا سے بات کرتے ہوئے بتایا کہ درست رزلٹ دینے والی لیبارٹری کے ٹیسٹ کی فیس اگر3000روپے ہوتی ہے تو جعلی لیبارٹریاں اسی ٹیسٹ کے1500روپے لیکر مریضوں کو اپنے پاس سے غلط رپورٹ بناکر دے دیتے ہیں اگر ان لیب مالکان سے اس سلسلہ میں بات کی جائے تو وہ کہتے ہیں کہ ہم نے اپنی طرف سے درست رپورٹ جاری کی ہے شہریوں نے وزیر صحت ڈاکٹر یاسمین راشد سمیت اعلیٰ حکام سے نوٹس لینے کا مطالبہ کرتے ہوئے کہا ہے کہ شہریوں کو غلط رپورٹس جاری کرنیوالی مہنگی لیبارٹریوں کو فوری طور پر سیل کرکے قانونی کاروائی عمل میں لائی جائے۔
غفار ریاض نمائندہ باغی ٹی وی قصور

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.