fbpx

نااہل اور نکمے بیورو کریٹس کی چھانٹی،ڈائریکٹری رٹائرمنٹ رولز پرعملدرآمد یقینی بنانے کا فیصلہ

اسلام آباد: وفاقی حکومت نے نااہل اور نکمے بیورو کریٹس (Dead wood) چھانٹی کرنے کیلئے وزارتوں اور ڈویژنوں میں ڈائریکٹری رٹائرمنٹ رولز پر عملدرآمد یقینی بنانے کا فیصلہ کیا ہے۔

باغی ٹی وی : تفصیلات کے مطابق وزیر اعظم نے معاون خصوصی برائے اسٹیبلشمنٹ سے وزارتوں اور ڈویژنوں میں ڈائریکٹری رٹائرمنٹ رولز پر عملدرآمد اور پیشرفت کےحوالے سے رپورٹ طلب کرلی-

فارن فنڈنگ کیس : تمام رسیدیں فراہم کرچکےہمیں اسکروٹنی کمیٹی نے کلیئرکردیا، وزیر اعظم

کابینہ اراکین نے اعلی سطح کی بیوروکریسی کا جدید دور کے ہائپرکائنیٹک ماحول سے درپیش چیلنجوں کا مقابلہ کرنے کے لیے تیار نہ ہونے کے باعث ہائبرڈ نظام قائم کرنے کی تجویز دی ہے۔

پہلے مرحلے میں بڑی وزارتوں اور ڈویژنوں میں نجی شعبہ سے تجربہ کار ،ماہر پروفیشنل اور بہترین ٹیلنٹ بھرتی کئے جانے کا امکان ہے۔

دستاویز کے مطابق وزیراعظم عمران خان کی زیر صدارت وفاقی کابینہ کے حالیہ اجلاس میں کابینہ اراکین نے پریشانی کا اظہار کرتے ہوئے کہاکہ ملک کی بیوروکریسی اور بطور خاص اعلی سطح کی بیوروکریسی جدید دور کے ہائپرکائنیٹک ماحول سے درپیش چیلنجوں کا مقابلہ کرنے کے لیے تیار نہیں، مسائل کے بولڈ اور آؤٹ آف دی باکس حل تلاش کرنے کیلئے تارکین وطن اور نجی شعبہ سے اسپیشلسٹ اور پروفیشنلز لانے کی ضرورت ہے ۔

کیا بروقت اقدامات سے سانحہ مری کو روکا جا سکتا تھا؟ وزیراعظم کا وفاقی وزرا سے سوال

واضح رہے کہ اپوزیشن جماعتیں اِن ہاؤس تبدیلی کے لیے متحرک ہوگئیں ن لیگ اور جمعیت علمائے اسلام (جے یوآئی) میں اس حوالے سے رابطہ بھی ہوا ہے جبکہ اس معاملے پر قومی اسمبلی میں اپوزیشن لیڈر شہباز شریف اور مولانا فضل الرحمان کے درمیان اگلے چند دنوں میں اسلام آباد میں ملاقات ہوگی شہباز شریف کو اِس ملاقات کیلئے نواز شریف نے ’گرین سگنل‘ دے دیا ہے شہباز شریف ملاقات میں اپوزیشن اتحاد پاکستان ڈیموکریٹک موومنٹ (پی ڈی ایم) کے سربراہ مولانا فضل الرحمان کو اِن ہاؤس تبدیلی پر آمادہ کریں گے جے یو آئی سے رابطےکے بعد مسلم لیگ ن اور پیپلزپارٹی کے درمیان رابطوں میں بھی پیش رفت ہوئی ہے۔

گوانتاناموبےکو قائم ہوئے 20 برس مکمل،امریکا کا جیل کو مکمل بند کرنے کا ارادہ

ذرائع ن لیگ کا کہنا ہے کہ مسلم لیگ ن نےکبھی نہیں کہا کہ وزیر اعظم عمران خان کو غیر آئینی طریقے سے ہٹایا جائے، ہم آئینی طریقہ ہی اپنانے کے حامی ہیں جو ان ہاؤس تبدیلی ہی بنتا ہے پیپلز پارٹی، مسلم لیگ ن کے اکٹھےہونے پر اِن ہاؤس تبدیلی میں مشکل نہیں ہوگی۔

ذرائع ن لیگ کا کہنا ہے کہ پیپلز پارٹی میں بھی چند لوگ جلد عام انتخابات سے متعلق ہمارے مؤقف کےحامی ہیں، توقع ہےدونوں جماعتوں کےدرمیان آئندہ انتخابات کے معاملے پر بھی جلد اتفاق ہوجائےگا

کورونا وبا:ملک میں ایک ہزار 467 کیسز رپورٹ،2 افراد جاں بحق

Facebook Notice for EU! You need to login to view and post FB Comments!