بابا جی ذرا بھی استقامت نہ دکھا سکے،مولانا تھوڑی ہمت تو دکھاتے یار، زید حامد کی مولانا پر تنقید

پاکستان کے معروف مذہبی سکالر اور عالم دین کے میڈیا سے معافی مانگنے پر زید حامد نے انہیں تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہا بابا جی ذرا‌سی استقامت بھی نہ دکھا‌سکے اگر غلطی سے میڈیا کے بارے میں سچ بول ہی دیا تھا‌تو

باغی ٹی وی : حال ہی میں وزیر اعظم عمران خان کی احساس ٹیلی تھون کی لائیو نشریات میں پاکستان سمیت پوری دنیا سے لوگ شریک ہوئے اور دل کھول کر عطیات دئیے جمعرات کو وزیراعظم ہاؤس میں کورونا ریلیف فنڈ کے حوالہ سے ملکی تاریخ کی سب سے بڑی احساس ٹیلی تھون میں وزیراعظم عمران خان بھی موجود تھے


ملک کے مختلف چینلز سے وابستہ اینکرز بھی ٹیلی تھون میں شریک تھے۔ اس موقع پر اندرون و بیرون ملک سے بڑی تعداد میں مخیر حضرات نے وزیراعظم کے کورونا ریلیف فنڈ کیلئے کروڑوں روپے کے عطیات کا اعلان کیا۔نشریات کے اختتام پر معروف مذہبی سکالر مولانا طارق جمیل نے عوام سے اس وبا سے احتیاط برتنے اور خدا کے حضور توبہ کرنے کی تلقین کی

مولانا طارق جمیل نے دعا سے قبل خطاب بھی کیا جس میں ایک بیان میں مولانا طارق جمیل نے اپنے بیان میں کہا کہ میڈیا پر جھوٹ بولا جاتا ہے ہم جھوٹی قوم ہیں ہم اس جھوٹ کے ساتھ اللہ کی بارگاہ میں کوئی مقام نہیں لے سکتے

22 کروڑ عوام میں کتنے لوگ سچے ہیں.؟. مولانا طارق جمیل نے ایک مثال دیتے ہوئے کہا کہ ایک بار مجھ سے ایک چینل کے مالک نے نصیحت مانگی۔ میں نے کہا اپنے چینل سے جھوٹ ختم کردو۔تو اس نے کہا کہ چینل ختم ہو سکتا ہے جھوٹ ختم نہیں ہو سکتا۔صرف پاکستان ہی نہیں پوری دنیا کا میڈیا جھوٹا ہے۔سب سے زیادہ جھوٹ میڈیا پر بولا جاتا ہے مولانا کے اس بیان پر میڈیا نےسخت ری ایکشن دیا جس پر
مولاناطارق جمیل نے اپنے بیان پر معافی مانگ لی تھی

اینکر پرسن حامد میر نے مولانا طارق جمیل کی میڈٰا سے معافی مانگنے کی ویڈیو اپنے ٹویٹر اکاؤنٹ پر شئیر کی اور اس کی پوسٹ میں لکھا کہ مولانا طارق جمیل نے وزیراعظم ہاؤس میں ہونے والی ٹیلی تھون کے دوران میڈیا پر جھوٹ بولنے کا الزام لگایا تھا جس پر ان سے ثبوت مانگے گئے تھے 24 گھنٹے کے بعد آج شام انہوں نے مجھ سمیت تمام میڈیا سے معافی مانگ لی ہے

زید حامد کی اس ٹویٹ پر زید حامد نے مولانا طارق جمیل کو طنز یہ انداز میں لکھا کہ ور بابا جی ذرا‌سی استقامت بھی نہ دکھا‌سکے اگر غلطی سے میڈیا کے بارے میں سچ بول ہی دیا تھا‌تو۔۔-

زید حامد نے مزید کہا کہ ہم نے تو کبھی میڈیا سے معافی نہیں مانگی اور کھل کے کہا ہے کہ ان میں اکثریت صحافتی طوایفیں ہیں، ابلاغی دھشت گرد اور غدار ہیں مولانا تھوڑی ہمت تو دکھاتے یار۔۔۔ توبہ۔۔۔

مولانا طارق جمیل نے ’میڈیا‘ سے متعلق دئیے گئے بیان پر معافی مانگ لی

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.