بابری مسجد کیس: ثالثی ناکام، 6 اگست سے باضابطہ سماعت کا آغاز

بابری مسجد اور رام جنم بھومی تنازعہ کا حل نکالنے کے لیے تشکیل دی گئی ثالثی کمیٹی ناکام ہو گئی ہے۔اب چھ اگست سے سپریم کورٹ میں اس مقدمے کی سماعت ہوگی۔
بھارتی سپریم کورٹ کا بابری مسجد کیس میں ملزمان کا ٹرائل نو ماہ کے اندر کرنے کا حکم
سپریم کورٹ کے چیف جسٹس رنجن گوگوئی نے کہا کہ ثالثی کا عمل ناکام رہا ہے اس لیے اب روزانہ سماعت ہوگی اور یہ سماعت اس وقت تک چلے گی جب تک کہ معاملہ نمٹا نہیں دیا جاتا۔

سپریم کورٹ کے سابق جج ایف ایم آئی کلیف اللہ، سیاسی کارکن مسٹر روی شنکر اور ثالثی امور کے ماہر ایڈوکیٹ شری رام پنچو کی ثالثی کمیٹی نے گذشتہ روز آئینی بنچ کے سامنے اپنی رپورٹ پیش کی۔

آئینی بنچ میںچیف جسٹس کے علاوہ جسٹس ایس اے بوبڑے، جسٹس ڈی وائی چندر چوڈ، جسٹس اشوک بھوشن اور جسٹس عبد النذیر ہیں۔

یاد رہے کہ گزشتہ سماعت میں عدالت نے کمیٹی کو 31 جولائی تک کام کرنے اور یکم اگست کو رپورٹ دینے کو کہا تھا۔

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.