زہریلی شراب پینے سے 8 افراد ہلاک، 11 نابینا اور 30 سے زائد کی حالت غیر

0
63

بھارتی ریا ست بہار کے علاقے چھپرا میں زہریلی شراب سے 24 گھنٹوں میں 8 لوگوں کی موت ہوگئی۔

باغی ٹی وی : بھارتی میڈیا کے مطابق بدھ کو پوجا کے بعد گاؤں کے لوگوں نے شراب پی 30 سے ​​زائد افراد کی طبیعت خراب بتائی جاتی ہے جن میں سے 11 افراد کی بینائی ختم ہو چکی ہے جبکہ 24 گھنٹوں میں 8 لوگوں کی موت ہوگئی تھی-

بھارت میں جعلی شراب پینے سے 21 افراد ہلاک درجنوں کی حالت غیر

بھارتی میڈیا کے مطابق چھپرا کے ضلع مجسٹریٹ راجیش مینا نے جمعہ کو آٹھ لوگوں کی موت کی تصدیق کی جمعرات کو ضلع مجسٹریٹ بھی ٹیم کے ساتھ گاؤں پہنچے تھے اور ساری صورتحال کا جائزہ لیا تھا-

اس دوران یہ بھی کہا گیا کہ ابتدائی طور پر موت زہریلی شراب پینے سے ہوئی ہے تفتیش کی جا رہی ہےاس وقت پٹنہ کے پی ایم سی ایچ میں ایک درجن سے زیادہ لوگ زیر علاج ہیں، جب کہ کچھ لوگ چھپرا صدر اسپتال میں زیر علاج ہیں۔ ں۔

پانچ افراد صدر اسپتال میں زیر علاج ہیں علاقے کے پولیس سپرنٹنڈنٹ سنتوش کمار نے کہا کہ واقعہ کے سلسلے میں تحقیقات جاری ہے۔ پولیس اپنا کام کر رہی ہے۔

زہریلی شراب پینے سے 25 ہلاکتیں

واضح رہے کہ گزشتہ ماہ بھی بھارتی ر یاست گجرات کے علاقے احمد آباد میں 50 سے زائد افراد کو نیم بے ہوشی کی حالت میں لایا گیا تھا۔ اہل خانہ کا کہنا تھا کہ ان سب کی یہ حالت شراب پینے کے بعد ہوئی اسپتال ذرائع کا کہنا تھا کہ 21 افراد کو مردہ حالت میں لایا گیا تھا جب کہ 30 افراد اب بھی زیر علاج ہیں جن میں سے 7 کی حالت نازک ہے جس کے باعث ہلاک ہونے والوں کی تعداد میں اضافہ ہو سکتا ہے۔

ہلاک ہونے والے زیادہ تر افراد دیہاڑی دار مزدور تھے۔ پولیس نے مقدمہ درج کر کے اس دکاندار کی تلاش شروع کردی ہے جہاں سے شراب خریدی گئی تھی پولیس کا کہنا تھا کہ جن اضلاع میں شراب پینے سے اموات ہوئی ہیں وہاں شراب بنانے، بیچنے اور خریدنے پر پابندی عائد ہے۔ چند مشتبہ افراد کو حراست میں لیا گیا ہے۔

پنجاب کے بڑے شہر میں زہریلی شراب سے کتنی ہوئی ہلاکتیں؟

واضح رہے کہ بھارت میں زہریلی شراب پینے سے ہلاکتوں کے واقعات عام ہیں اور گزشتہ برس ریاست پنجاب میں ایک تقریب میں شراب پینے سے 102 افراد ہلاک ہوگئے تھےجبکپ ملک کے مغربی صوبے بنگال میں بھی 2011 میں جعلی شراب کی وجہ سے 170 اموات واقع ہو گئی تھیں۔

بھارت میں سالانہ 5 بلین لیٹر الکحل استعمال کیا جاتا اور اس ضرورت کے صرف 40 فیصد کو قانونی شکل میں پیدا کیا جاتا ہے۔ ملک کے صوبوں بہار، گجرات، میزرام اور ناگالینڈ میں الکحل کے استعمال اور فروخت کو ممنوع قرار دے دیا گیا تھا۔

لاک ڈاؤن کے دوران شراب کی دکانیں کھولنے کی ملی اجازت

شراب کی دکانیں کھولنے کا نوٹفکیشن، حقیقت کیا؟

شراب پینے سے منع کرنے پر نوجوان نے ماں کو آنکھ میں گولی مار کر ہلاک کر دیا

Leave a reply