fbpx

بھارت نے دریائے راوی میں پانی چھوڑ دیا، سیلاب کا خطرہ

بھارت اپنی جابرانہ حرکتوں سے باز نا آیا.بھارت نے آبی جارحیت کا مظاہرہ کرتے ہوئے دریائے راوی میں ایک لاکھ ستر ہزار کیوسک سے ذائد پانی چھوڑ دیا.جس کے نتیجے میں لاہور ،گوجرانوالہ اور ملتان کی ندی نالوں مین سیلاب کا خطرہ پیدا ہو گیا ہے،خطرے کے پیش نظر پی ڈی ایم اے نے الرٹ جاری کر دیا ہے.

انڈس حکام کا کہنا ہے کہ بھارت نے دریائے راوی میں پانی چھوڑنے کے حوالے سے پیشگی آگاہ کردیا۔انڈس حکام کے مطابق بھارت کے انڈس واٹر کمیشن کے حکام نے پاکستان کو اطلاع کردی ہے۔ بھارت نے اوجھ بیراج کے اسپل وے کھول دیے جس کے بعد ایک لاکھ 70 ہزارکیوسک کا ریلا بھارت سے پاکستان داخل ہوگا۔ حکام کے مطابق پی ڈی ایم اے نے متعلقہ محکموں کو الرٹ جاری کر دیا۔

کوہ سلیمان تمن قیصرانی چتر وٹہ بستی سیلابی ریلے کی وجہ سے صفحہ ہستی سے مٹ گئی

پی ڈی ایم اے کا کہنا ہے کہ محکمہ موسمیات نے دریائے راوی میں سیلاب کی وارننگ جاری کر دی۔پی ڈی ایم اے کے مطابق بھارت نے اُجھ بیراج سے 1530 PST پر 1,71,797 کیوسک پانی چھوڑا ہے۔ دریائے راوی میں درمیانے سے اونچی سطح کے سیلاب کا امکان ہے۔بھارت کی جانب سے چھوڑے گئے پانی کی وجہ سے دریا میں پانی کا بہاؤ اونچا ہے.

 

حالیہ بارشوں کے بعد تربیلا ڈیم پانی سے بھرگیا،مزید بارشوں کی پیشن گوئی

 

ترجمان پی ڈی ایم اے کے مطابق راوی میں اونچے بہاؤ سے گوجرانوالہ، لاہوراور ملتان ڈویژن کے ندی نالوں میں طغیانی آسکتی ہے۔دریائے راوی سےمنسلک ندی نالوں میں پانی کی سطح بلند ہو سکتی ہے جس سے علاقے میں سیلاب آ سکتا ہے۔تمام اضلاع پیشگی انتظامات مکمل کریں،مشینری اور عملے کو الرٹ رکھا جائے۔تمام ادارے ہنگامی صورتحال سے نبرد آزما ہونے کے لیے تیار رہیں۔

پی ڈی ایم اے کی جانب سے متعلقہ محکموں کو ہدایت کی گئی ہے کہ جن علاقوں میں سیلاب کا امکان ہے وہاں کے مکینوں کوجب نھی ضرورت ہو ریلیف کیمپوں یا محفوظ مقامات پر منتقل کیا جائے.سیلاب میں پھنسے ہوئے خاندانوں کئلئے خوراک کے بیکز کی فراہمی یقینی بنائی جائے.پی ڈی ایم اے نے مویشیوں کے انخلاء اور ان کے چارے سمیت ویکسینیشن کو بھی پقینی بنانے کی ہدایت کی.

انڈس حکام کا کہنا ہے کہ بھارت نے دریائے راوی میں پانی چھوڑنے کے حوالے سے پیشگی آگاہ کردیا۔انڈس حکام کے مطابق بھارت کے انڈس واٹر کمیشن کے حکام نے پاکستان کو اطلاع کردی ہے۔ بھارت نے اوجھ بیراج کے اسپل وے کھول دیے جس کے بعد ایک لاکھ 70 ہزارکیوسک کا ریلا بھارت سے پاکستان داخل ہوگا۔ حکام کے مطابق پی ڈی ایم اے نے متعلقہ محکموں کو الرٹ جاری کر دیا۔