بھارت نے سندھ طاس معاہدے کی دھجیاں‌اڑا دیں

بھارت نے سندھ طاس معاہدے کی دھجیاں‌اڑا دیں. سندھ طاس معاہدہ عملاً معطل کر دیا

باغی ٹی وی رپورٹ کے مطابق بھارت نے سندھ طاس معاہدے کی دھجیاں‌اڑا دیں. سندھ طاس معاہدہ عملاً معطل کر دیا.بھارت اپنے سپل وے سے پانی چھوڑنے سے قبل اطلاع دینے کا پابند ہے جس کی اس وقت پرواہ نہیں‌ کی گئی.کشمیر ایشو کی آڑ میں بھارت نے عملا سندھ طاس معاہدہ معطل اور پانی پر ہر طرح کی ڈیٹا شیئرنگ بند کر دی ہے۔ بھارت نے ڈیموں سے پانی کے اخراج پر کوئی پیشگی اطلاع نہیں دی، بھارت مسلسل انڈس ٹریٹی کی خلاف ورزی کر رہا ہے، یکم جولائی سے ستمبر تک کا دریاؤں کا ڈیٹا بھی نہیں بھجوایا گیا۔
بھارت روپر ہیڈورکس سے دولاکھ کیوسک پانی دریائے ستلج میں چھوڑرہا ہے اور ہر ایک گھنٹے بعد پانی چھوڑا جارہا ہے۔ بھارت کی طرف سے دریائے ستلج میں پانی چھوڑے جانے کا سلسلہ اتوار کی شام سے شروع ہوا جورات گئے تک جاری رہے گا۔ یہ بھی اطلاعات ہیں کہ دریائے ستلج میں 1988ء کے بعد یہ ایک بڑا سیلاب ہوگا جس سے ہزاروں ایکڑ زمین، سیکڑوں دیہات متاثر ہوں گے۔

این ڈی ایم اے کے ترجمان کے مطابق بھارت نےلداخ ڈیم کے5 میں سے 3 اسپل ویز کھول دیے ہیں،یہ پانی خرمنگ کے مقام پر دریائے سندھ میں شامل ہو گا،گلگت بلتستان ڈیزاسٹرمینجمنٹ،دریائےسندھ کےاطراف تمام ضلعی انتظامیہ کوالرٹ جاری کر دیا گیا ہے،

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.